سفارتکار کی منظوری، اسرائیل کی برازیل کو دھمکی

زپی ہوٹوولی تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption اسرائیلی نائب وزیرِ خارجہ نے کہا ہے کہ برازیل کے ساتھ تعلقات کو نقصان پہنچ سکتا ہے

اسرائیل نے برازیل کو متنبہ کیا ہے کہ اگر اس نے جیوش سیٹلمینٹ موومنٹ کے سابق سربراہ کو برازیلیا میں اسرائیل کا سفارتکار ماننے سے انکار تو دونوں ممالک کے درمیان تعلقات خراب ہو سکتے ہیں۔

ارجنٹائن میں پیدا ہونے والے دانی دایان کی تقرری چار ماہ قبل ہوئی تھی لیکن ابھی بھی برازیل نے ان کی منظوری نہیں دی ہے۔

اتوار کو اسرائیل کی نائب وزیرِ خارجہ نے کہا کہ اگر دایان کی تقرری کی تصدیق نہ کی گئی تو اسرائیل برازیل کے ساتھ اپنے تعلقات کو ’ثانوی سطح‘ پر لے آئے گا۔

برازیل نے ابھی نائب وزیرِ خارجہ کے بیان پر کوئی ردِ عمل ظاہر نہیں کیا ہے۔

دایان 2007 سے لے کر 2013 تک یشا کونسل کے چیئرمین تھے جو کہ مقبوضہ علاقوں میں یہودی آبادکاروں کا ایک گروہ ہے۔

غربِ اردن اور مشرقی یروشلم میں یہودی آبادیاں اسرائیل اور فلسطینیوں کے درمیان ایک متنازع مسئلہ ہے۔

بین الاقوامی قوانین کے تحت آبادیاں غیر قانونی ہیں لیکن اسرائیل اس بات سے انکار کرتا ہے۔

اسرائیل کی نائب وزیرِ خارجہ زپی ہوٹوولی نے اسرائیل کے چینل 10 کو بتایا کہ دایان کو تبدیل نہیں کیا جائے گا۔

زپی ہوٹوولی نے یہ بات دانی دایان کے اس بیان کے بعد کہی ہے جس میں انھوں نے خبردار کیا تھا کہ اگر حکومت نے اس معاملے میں مداخلت نہ کی تو اس سے آبادکاروں کی بیرون ممالک تعیناتی کو روکنے کی ایک مثال بن جائے گی۔

تاہم روئٹرز نے برازیل کی وزارتِ خارجہ کے ایک نامعلوم ذرائع کا حوالہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ برازیل دباؤ میں نہیں آئے گا۔

اسی بارے میں