طوفان کے باعث شمالی سمندر میں تیل کے دو کنویں بند

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ہیلی کاپٹروں نے جمعرات کی صبح عملے کو وہاں سے نکالنا شروع کر دیا تھا۔ حکام کے مطابق وہاں 235 افراد کام کر رہے تھے

برطانیہ کے شمالی سمندر میں واقع تیل کے دو کنوؤں کو طوفان کے باعث نقصان پہنچنے کے خدشے کے پیشِ نظر بند کر دیا گیا ہے۔

خطرہ ہے کہ طوفانی ہواؤں کے باعث پھسل جانے والا بحری جہاز ان دونوں میں سے کسی سے ٹکرا جائے گا۔

110 میٹر لمبے جہاز کو قابو کرنے کی کوششیں کی جا رہی ہیں، لیکن سمندر کی اونچی لہریں اس میں رکاوٹ بن رہی ہیں۔

تیل کے ان کنوؤں میں موجود سینکڑوں افراد کو بھی منتقل کیا جا رہا ہے۔

وال ہال اور ایکوفسک آئل فیلڈز میں بیشتر بادبان متاثر ہوئے ہیں، جبکہ ایک شخص ہلاک بھی ہوا ہے۔ ناروے کے ساحلی محافظوں نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ رہائشی جگہ تک جانے والی لہروں کی اونچائی کم سے کم 60 فٹ تھی۔

تین زخمیوں کو ہیلی کاپٹروں کی مدد سے نکالا گیا، تاہم ایک شحض بعد میں ہلاک ہو گیا۔ یہ ناروے کا باشندہ تھا اور اس کی عمر 50 برس سے زائد تھی۔

ایک بیان میں سٹیٹ آئل کاکہنا ہے کہ ’بلند لہریں تیل کے کنوؤں پر لگی مشینری سے ٹکرائیں اور رہائشی مقام کو بھی نقصان پہنچایا۔‘

بادبان کو نقصان پہنچنے کے بعد وال ہال فیلڈ میں موجود ایک بحری جہاز تیز ہواؤں کے باعث لنگر سے ٹوٹ گیا۔

یہ جہاز 110 میر لمبا اور 30 میٹر چوڑا ہے۔ خطرہ ہے کہ یہ کسی بادبان کو توڑ سکتا ہے۔

ہیلی کاپٹروں نے جمعرات کی صبح عملے کو وہاں سے نکالنا شروع کر دیا تھا۔ حکام کے مطابق وہاں 235 افراد کام کر رہے تھے۔

ان کنوؤں کی مالک کمپنی کا کہنا ہے کہ وہ روزانہ 50 ہزار بیرل تیل کی پیداوار کر رہی تھی تاہم ناروے کے ٹیلی وژن کے مطابق اس کی پیداوار بند تھی۔

اسی بارے میں