’دولت اسلامیہ کا سر کاٹ دیں گے‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ڈونلڈ ٹرمپ نے اس سے قبل اپنی انتخابی مہم کے سلسلے میں ہر ہفتے دو کروڑ روپے خرچ کرنے کا اعلان کیا تھا

امریکہ میں ریپبلکن پارٹی کا صدارتی امیدوار بننے کی دوڑ میں شامل ڈونلڈ ٹرمپ نے اپنی انتخابی مہم کے سلسلے میں پہلا ٹی وی اشتہار جاری کیا ہے۔

اس انتخابی اشتہار میں انھوں نے مسلمانوں اور میکسیکو سے نقل مکانی کر کے آنے والے افراد کے بارے میں اپنے متنازع بیان کو دہرایا ہے۔

الشباب کی پراپیگنڈا ویڈیو میں ڈونلڈ ٹرمپ

ڈونلڈ ٹرمپ کے مسلم مخالف بیان پر شدید ردِ عمل

ٹرمپ مسلمانوں پر پابندی کے موقف پر قائم

اس ویڈیو میں ڈونلڈ ٹرمپ کہتے ہیں کہ وہ شدت پسند تنظیم دولت ’کا سر کاٹ دیں گے‘ اور ’ان کا تیل ضبط کر لیں گے۔‘

خیال رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے اس سے قبل اپنی انتخابی مہم کے سلسلے میں ہر ہفتے دو کروڑ روپے خرچ کرنے کا اعلان کیا تھا۔

اس سے قبل صومالیہ کے شدت پسند گروہ الشباب کی پروپیگنڈا ویڈیو میں اپنی تقریر کا اقتباس استعمال کیے جانے کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک مرتبہ پھر مسلمانوں کے امریکہ میں داخلے پر پابندی کے موقف کا دفاع کیا تھا۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ لوگوں نے ان کی تعریف کی تھی کہ انھوں نے اس ’مسئلے‘ پر دیانتداری سے بات کی ہے جس پر بات کرنے سے دوسرے رہنما کتراتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ریاست کیلیفورنیا میں فائرنگ کے واقعے کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا تھا کہ مسلمانوں کے امریکہ میں داخلے پر ’مکمل‘ پابندی عائد کر دینی چاہیے

امریکی چینل سی بی ایس سے بات کرتے ہوئے ریپبلکن پارٹی کے امیدوار کا کہنا تھا کہ اب لوگ اس مسئلے پر ’بات کرنا شروع ہو گئے ہیں۔‘

ریاست کیلیفورنیا میں فائرنگ کے واقعے کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا تھا کہ مسلمانوں کے امریکہ میں داخلے پر ’مکمل‘ پابندی عائد کر دینی چاہیے۔

ٹرمپ کا کہنا تھا کہ سرحدوں کو اس وقت تک مکمل طور پر بند کر دینا چاہیے جب تک ’ہمارے ملک کے نمائندگان اس بات کا تعین نہیں کر لیتے کہ کیا ہو رہا ہے۔‘

ان کے اس بیان کی امریکہ میں شدید مذمت کی گئی تھی اور خود ان کی جماعت کے دوسرے صدارتی امیدواروں، صدر اوباما اور برطانوی وزیرِ اعظم ڈیوڈ کیمرن نے بھی انہیں شدید تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔

امریکہ کی سابق سیکریٹری خارجہ اور صدارتی امیدوار کی دوڑ میں شامل ہیلری کلنٹن کا کہنا تھا کہ ڈونلڈ ٹرمپ شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ کے لیے ’ سب سے بڑے بھرتیاں کروانے والے‘ بنتے جا رہے ہیں۔

دوسری جانب ڈویموکریٹس کے صدارتی امیدوار کی دوڑ میں شامل ہیلری کلنٹن کے شوہر بل کلنٹن نے بھی ہیلری کلنٹن کی انتخابی مہم میں حصہ لینا شروع کر دیا ہے۔

اسی بارے میں