امریکی بمبار طیارے کی جنوبی کوریا پر پروازیں

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

امریکہ نے شمالی کوریا کی جانب سے ہائڈروجن بم کا کامیاب تجربہ کرنے کے بعد طاقت کا مظاہرہ کرنے کے لیے جنوبی کوریا کے اوپر سے B-52 بمبار طیارہ اڑایا ہے۔

امریکی بی 52 بمبار طیارے نے شمال جنوبی سرحد کے قریب فضائی بیس کے اوپر پرواز کی۔

شمالی کوریا کے رہنما کم جونگ ان کا کہنا ہے کہ بم کا تجربہ کرنا امریکہ کے ساتھ جوہری جنگ روکنے کے لیے اپنے دفاع میں کیا گیا اقدام تھا۔

کم جونگ ان کے حوالے سے شمالی کوریا کے سرکاری ذرئع ابلاغ نے بتایا ہے کہ ’یہ ایک خود مختار ریاست کا قانونی حق ہے اور ایک صحیح عمل ہے جس پو کوئی بھی تنقید نہیں کر سکتا۔‘

امریکہ جو کہ جنوبی کوریا کا اتحادی ہے کا کہنا ہے کہ ’بی 52 طیارے کی پرواز شمالی کوریا کے اشتعال انگیز عمل کو جواب ہے۔‘

یونہیپ کے مطابق واشنگٹن خطے میں طیارہ بردار بیڑہ بھیجنے پر غور کر رہا ہے۔

دوسری جانب بی 52 طیارے کی پرواز پر ابھی تک شمالی کوریا کی جانب سے کوئی بیان سامنے نہیں آیا ہے۔

شمالی کوریا کے ہائیڈروجن بم کے تجربے کی تصدیق ہونے میں ہفتے لگ جائیں گے تاہم ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ دھماکہ اتنا بڑا نہیں تھا کہ یہ اس قسم کے آلے سے کیا گیا ہو۔

اسی بارے میں