امریکہ میں آلودہ پانی کے باعث ایمرجنسی نافذ

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption اداکار مائیکل مور جن کا فلنٹ سے تعلق ہے انھوں نے سنیچر کو منعقدہ ایک ریلی میں شرکت کی

امریکی صدر براک اوباما نے فلنٹ اور میشیگن میں ہنگامی صورت حال کا اعلان کردیا ہے کیونکہ وہاں کے پانی میں لیڈ یعنی سیسہ کی ملاوٹ سامنے آئی ہے۔

شہر کے پانی میں آلودگی کا معاملہ سنہ 2014 میں پانی سپلائی کرنے والے کو تبدیل کرنے کے بعد سامنے آیا ہے۔ پانی کی سپلائی میں پرانے پائپ سے گھل کر لیڈ شامل ہوگیا ہے۔

اس ناگہانی صورت حال کے اعلان سے وفاقی فنڈنگ کو 50 لاکھ ڈالر کا جھٹکا لگے گا۔

اس سے قبل رواں ہفتےگورنر رک سنائڈر نے وفاقی حکومت سے تین کروڑ دس لاکھ ڈالر کی درخواست کی تھی۔

انھوں نے کہا تھا کہ شہر کے تقریبا ایک لاکھ لوگوں کی ضرورتوں کی تکمیل ریاست کی صلاحیت سے باہر ہے اور اس لیے انھوں نے آفات کے اعلان کی بات کہی تھی۔

لیکن میشیگن سے آنے والی رپورٹس کے مطابق صدر اوباما نے اس درخواست کو مسترد کر دیا تھا۔

اکتوبر میں ہونے والی جانچ میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ پانی کی سپلائی اور بچوں کے خون میں سیسے کی مقدار بڑھی ہوئی ہے۔ خیال رہے کہ ایک حد سے زیادہ بچوں میں لیڈ یا سیسے کے ہونے سے ان کے سیکھنے کا عمل یا ان کا برتاؤ متاثر ہوسکتا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption بہت سی جگہوں سے شہر کے باشندوں کے لیے پینے کا پانی روانہ کیا جارہا ہے

اس سے قبل وہاں کے باشندوں نے پانی کی نئی سپلائی کے بعد پانی کے رنگ و بو کے ساتھ سر درد اور جسم پر دانے نکلنے کی شکایات کی تھی۔

خیال رہے کہ سنہ 2014 کے بعد سے شہر کا پانی ڈیٹرائٹ کے بجائے فلنٹ ندی سے فراہم کیا جانے لگا تھا لیکن اب پھر اس کا تعلق ڈیٹرائٹ سے جوڑ دیا گيا ہے۔

میشیگن کے اٹارنی جنرل نے کہا ہے کہ وہ اس بارے میں تفتیش کریں گے کہ کہیں پانی کے سلسلے میں ریاست کے کسی قانون کی خلاف ورزی تو نہیں کی گئی ہے۔

سنیچر کو گلوکار شیر نے کہا تھا کہ وہ فلنٹ کے شہریوں کے لیے ایک لاکھ 80 ہزار پانی بی بوتلیں روانہ کریں گی۔

انھوں نے کہا کہ ’یہ ایک بڑا المیہ ہے اور دکھ اس بات کا ہے کہ یہ ملک کے بیچ و بیچ رونما ہو رہا ہے۔‘

اسی بارے میں