بی بی سی کی صحافی کو امریکہ جانے سے روک دیا گیا

تصویر کے کاپی رائٹ Zoubin Navi
Image caption رعنا اپنی رشتے داروں سے ملاقات کے لیے امریکہ جا رہی تھیں لیکن انھیں ایئر پورٹ پر امریکہ جانے والی پرواز پر سوار ہونے سے روک دیا گیا

امریکہ کے ویزا کے قوانین میں تبدیلی کے بعد بی بی سی سے وابستہ ایرانی نژاد برطانوی صحافی کو برطانیہ سے امریکہ جانے والی پرواز پر سوار ہونے سے روک دیا گیا ہے۔

ایئرپورٹ پر حکام نے بی بی سی فارسی سے وابستہ صحافی رعنا رحیم پور سے کہا کہ وہ یورپی مملک کو حاصل ویزا استثنٰی سکیم کے تحت امریکہ نہیں جا سکتیں۔

امریکہ میں دہشت گردی کے واقعات کے بعد امریکہ نے دہری شہریت کے حامل افراد اور مختلف ممالک کے لیے ویزا استشنٰی سکیم ختم کر کے انھیں ویزا لے کر امریکہ میں داخل ہونے کی ہدایت دی گئی تھی۔

لیکن رعنا کا کہنا ہے کہ سفارت خانے سے رابطہ کرنے پر انھوں واضح طور کچھ نہیں بتایا گیا۔

برطانونی دفتر خارجہ کی ویب سائٹ کے مطابق امریکہ کے ویزا قوانین میں ترمیم کا اطلاق یکم اپریل سے ہو گا جبکہ امریکی محکمۂ خارجہ کے مطابق حکام نے ’ویزا میں تبدیلی کے قوانین پر عمل درآمد کرنا شروع کر دیا ہے۔‘

بی بی سی فارسی سروس کی نامہ نگار نے بتایا کہ ایجنسی سے رابطہ کرنے پر بتایا گیا کہ انھیں شہریت کی وجہ سفر کرنے سے روکا گیا ہے۔

رعنا اپنی رشتے داروں سے ملاقات کے لیے امریکہ جا رہی تھیں لیکن انھیں ایئر پورٹ پر امریکہ جانے والی پرواز پر سوار ہونے سے روک دیا گیا۔

انھوں نے امریکی ویزا کے نئے قوانین کو ’ناانصافی‘ قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ اس کے ذریعے وہ اُن ایرانیوں پر بھی پابندیاں عائد کرنا چاہتے ہیں جو اپنے والدین یا شوہر کی وجہ سے ایرانی قومیت کے حامل ہیں۔

رعنا نے ٹویٹ کی کہ ’میری برطانوی بیٹی اپنے امریکی کزن کی سالگرہ میں صرف اس لیے شرکت نہیں کر سکتی کیونکہ اُس کی ماں ایران میں پیدا ہوئی تھی۔‘

نئے امریکی ویزا کے قوانین سے عراقی، شامی اور سوڈان سے تعلق رکھنے والے دوہری شہریت کے حامل افراد بھی متاثر ہوئے ہیں۔

اسی بارے میں