کینیڈا میں چار افراد کی ہلاکت، 17 سالہ لڑکے پر فردِ جرم عائد

تصویر کے کاپی رائٹ AP

کینیڈا کے مغربی صوبے سسکیچوئن کی پولیس کا کہنا ہے کہ ایک سکول سمیت دو مقامات پر فائرنگ کر کے چار افراد کو ہلاک کرنے کے معاملے میں ایک 17 سالہ لڑکے پر فردِ جرم عائد کی گئی ہے۔

حکام کے مطابق ملزم پر، جس کا نام کم عمری کی وجہ سے ظاہر نہیں کیا جا سکتا قتلِ عمد کے چار اور قتل کی کوشش کے سات الزامات عائد کیے گئے ہیں۔

ہلاکتوں کا یہ واقعہ جمعے کو پیش آیا تھا جب لا لوچے کمیونٹی سکول اور ایک دیگر مقام پر فائرنگ سے چار افراد ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے تھے۔

ملک کے وزیرِ اعظم جسٹن ٹروڈو نے کہا ہے کہ اس قسم کے واقعات ملک کے’ہر والدین کے لیے ڈراؤنا خواب ہیں۔

سنیچر کو ایک پریس کانفرنس میں رائل کینیڈین ماؤنٹڈ پولیس کے حکام نے بتایا کہ ملزم کو آئندہ ہفتے عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

مشتبہ حملہ آور کو سکول کے باہر سے حراست میں لیا گیا تھا اور تاحال یہ واضح نہیں کہ اس نے یہ حرکت کیوں کی۔

پولیس کے مطابق اس واردات کے دوران ملزم نے پہلے ایک مکان میں 17 سالہ ڈین فونٹین اور اس کے 13 سالہ بھائی ڈریڈن کو ہلاک کیا تھا۔

اس کے بعد اس نے سکول کا رخ کیا اور وہاں 25 سالہ استاد ایڈم وڈ اور 21 سالہ مددگار استاد میری جین ویئر اس کا نشانہ بنیں۔

اسی بارے میں