کارڈف میں پناہ گزینوں کے لیے کلائی پر بینڈ پہننا ضروری

برطانیہ کے شہر کارڈف میں پناہ گزینوں کو کھانا فراہم کرنے والی نجی کمپنی کا کہنا ہے کہ وہ کھانا حاصل کرنے کے لیے کلائی بند (رسٹ بینڈ) پہننے کی شرط کو ختم کر دے گی۔

یہ بات مقامی رکن پارلیمان جو سٹیونس نے بتائی ہے۔

خیال رہے کہ لنکس ہاؤس میں رہنے والے پناہ گزینوں کو چمکدار رنگ کے کلائی بند دیے گئے ہیں تاکہ انھیں کھانا مل سکے۔

بعض لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ ان کے انسانی وقار کے منافی ہے اور یہ بات مڈلزبرو میں ان کے گھروں کو سرخ رنگ میں رنگ دینے کے بعد سامنے آئی ہے جہاں اس کی وجہ سے انھیں گالیوں اور ناروا سلوک کا سامنا رہا ہے۔

اس کے بعد پناہ گزینوں کو مکان فراہم کرنے والی ہاؤسنگ کمپنی نے کہا کہ ان کے دروازوں کو پھر سے پہلے جیسا رنگ دیا جائے گا تاکہ انھیں پناہ گزین کے طور پر علیحدہ طور پر نہیں پہچانا جا سکے۔

Image caption لنکس کو وزرات داخلہ نے کارڈف میں پناہ گزینوں کی رہائش کا بندوبست کرنے کا کانٹریکٹ دیا تھا

اتوار کو کارڈف سنٹرل سے لیبر پارٹی کی رکن پارلیمان جو سٹیونس نے کہا کہ وہ کلیئر سپرنگ گروپ کی آپریشن ڈائرکٹر کے ساتھ رابطے میں ہیں۔ اس کمپنی کو وزرات داخلہ نے کارڈف میں پناہ گزینوں کی رہائش کا بندوبست کرنے کا کانٹریکٹ دیا تھا۔

انھوں نے کہا کہ انھوں نے ایک ضمانت دی ہے کہ خوراک حاصل کرنے کا یہ طریقہ عمل پیر سے روک دیا جائے گا۔

اس سے قبل 36 سالہ پناہ گزین ایرک نگالا نے بی بی سی کو بتایا کہ انھوں نے تقریبا دو ماہ لنکس پر گزارے اور انھوں نے کلائی بند پہنے کی ضرورت پر آواز اٹھائی لیکن وہ اسے تبدیل کرانے میں ناکام رہے۔

انھوں نے کہا کہ انھیں یہ بتایا گيا کہ یہ وزارت داخلہ کا حکم ہے لیکن انھوں نے بتایا کہ کوئی بھی پناہ گزین اس بات کو قبول کرنے کے لیے تیار نہیں تھا۔

Image caption مشرقی لندن میں پناہ گزینوں کے گھروں کو سرخ رنگ میں پینٹ کر دیا گيا تھا

انھوں نے کہا کہ کلائی بند پہننا ان کے لیے ’لیبل لگانے‘ کی علامت اور ’تناؤ‘ کا سبب تھا۔

اسی بارے میں