نائجیریا: بوکوحرام کے حملے میں 50 شہری ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption سنیچر کو ہونے والے اس حملے میں کئی گھنٹوں تک فائرنگ کا سلسلہ جاری رہا

نائجیریا میں بوکو حرام کے شدت پسندوں کی جانب سے کیے جانے والے بم حملے اور فائرنگ کے نتیجے میں کم از کم 50 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

شمال مشرقی نائجیریا میں واقع دلوری نامی گاؤں سے آنے والی تصاویر میں تباہ شدہ گھروں اور مرے ہوئے مال مویشیوں کو دیکھا جا سکتا ہے۔

بوکو حرام کی وجہ سے ’10 لاکھ بچے سکول نہیں جا سکتے‘

اطلاعات کے مطابق گاؤں میں لگی آگ کو دس کلومیٹر دور سے دیکھا جاسکتا ہے۔

ایک عینی شاہد کے مطابق حملے کے بعد علاقے سے لوگوں کی چیخ وپکار دور تک سنی جا سکتی تھی۔

سنیچر کو ہونے والے اس حملے میں کئی گھنٹوں تک فائرنگ کا سلسلہ جاری رہا اور شاید ہی اس حملے سے گاؤں کا کوئی حصہ بچا ہو۔

مقامی لوگوں کے مطابق حملے میں 50 افراد ہلاک ہوئے جبکہ خبرساں ادارے رائٹرز کے بقول اس کے صحافی نے مردہ خانے میں 65 لاشیں گنی ہیں۔

خیال رہے کہ شدت پسند تنظیم بوکو حرام کی جانب سے گذشتہ چھ سالوں سے شمال مشرقی نائجیریا کے علاقوں میں پرتشد کارروائیاں جاری ہیں جس کے نتیجے میں عام شہری بری طرح متاثر ہوئے ہیں۔

حال ہی میں ملک کے صدر محمد بوہاری نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ ان کی فوج اسلامی شدت پسند تنظیم بوکو حرام کو پوری طرح سے شکست دینے کے بہت قریب ہے۔

یاد رہے کہ نائجیریا میں بوکو حرام کی جانب سے کی جانے والی پر تشدد کارروائیوں کے نتیجے میں اب تک تقریباً 17000 افراد ہلاک اور 20 لاکھ کے قریب بے گھر ہو چکے ہیں۔

اسی بارے میں