ناکارہ بحری جہاز کو بندرگاہ پر لانے کی ایک اور کوشش

اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

عملے کے بغیر سمندر کی لہروں کے رحم و کرم پر بہتا ہوا ایک ناکارہ مال بردار جہاز فرانس کے ساحلوں سے ٹکرانے والا ہے لیکن امید ہے کہ ساحل سے ٹکرانے سے قبل ہی اسے محفوظ طریقے سے بندرگاہ تک پہنچا دیا جائے گا۔

ماڈرن ایکسپریس کے نام سے رجسٹرڈ اس جہاز کو گذشتہ منگل کو خالی کرا لیا گیا تھا جب خطرے کے بارے میں ایک کال کے بعد اس پر سوار عملے کے 22 افراد کو ہیلی کاپٹر کے ذریعے نکال لیا گیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ bbbbc
Image caption جہاز پر ایندھن کی وجہ سے ساحل پر ہنگامی انتظامات کیے جا رہے ہیں

اس کو کھینچ کر بندرگاہ تک لے جانے کی کوشش ناکام ہو گئی لیکن پیر کو ایسی ایک اور کوشش کی جائے گی۔ اگر یہ کوشش بھی ناکام ہو گئی تو یہ جہاز سوموار کی شب یا منگل کی صبح کسی وقت فرانس کے جنوب مغربی حصے سے ٹکرائے گا۔

اتوار کو خراب موسم کی وجہ سے سمندر میں تلاطم کی وجہ سے اس 164 میٹر طویل جہاز کو ’ٹو‘ کر کے یا باندھ کر لانے کی کوشش ناکام ہو گئی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ bbc
Image caption اس جہاز پر بڑی مقدار میں ایندھن بھی موجود ہے

بحیرہ اوقیانوس کے سمندری اہلکار ایمینول ڈی اولیور کا کہنا تھا کہ کارگو جہاز کو سیدھا کرنا تقریباً ناممکن ہے۔

فرانسیسی حکام کا کہنا ہے کہ جہاز پر تین سو ٹن ایندھن بھی موجود ہے۔ ایک فرانسیسی جریدے کے مطابق جہاز کے ساحل سے ٹکرانے کے امکان کے پیش نظر ایندھن کو نکالنے کے لیے ہنگامی انتظامات کیے جا رہے ہیں۔

سنہ 2002 میں شمالی سپین میں پرسٹیج آئل ٹینکر کے ڈوب جانے سے پچاس ہزار ٹن تیل سمندر میں بہہ جانے سے کئی ہزار میل پر پھیلا ہوا سمندر آلودگی کا شکار ہو گیا تھا۔

اتوار کو اطلاعات کے مطابق ماڈرن ایکسپریس جنوبی مغربی فرانس کے ساحلوں سے سو کلو میٹر کے فاصلے پر تھا۔