الشباب کا امریکی ڈرون پکڑنے کا دعویٰ

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption امریکی حکومت نے اب تک اس معاملے پر پر کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے

صومالیہ میں شدت پسند تنظیم الشباب کا کہنا ہے کہ اس نے ملک کے جنوب میں گرا ہوا ایک امریکی ڈرون پکڑا ہے۔

تنظیم نے اپنے ریڈیو سٹیشن پر اعلان کیا کہ ڈرون میں چھ میزائل نصب ہیں۔

صومالیہ میں الشباب کا ساحلی شہر پر قبضہ

’جیڈو‘ کے خطے میں بارڈیئر کے علاقے کے قریب رہائشیوں کا کہنا ہے کہ انھوں نے یہ ڈرون زمین پر گرا ہوا دیکھا ہے۔

امریکی حکومت نے اب تک اس معاملے پر کوئی بیان نہیں دیا ہے۔

امریکہ نے ماضی میں ڈرونز کے ذریعے شدت پسند تنظیم الشباب کے رہنماؤں کو اپنا ہدف بنایا ہے۔

دریں اثنا ملک کے دارالحکومت موغادیشو میں بم حملے کے نتیجے میں سابق وزیر دفاع ہلاک ہو گئے ہیں۔

محمد حاجی ابراہیم کی گاڑی میں ایک بم نصب تھا۔ الشباب نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

تقریباً دس دن قبل صومالیہ میں اطلاعات کے مطابق شدت پسند تنظیم الشباب نے ساحلی شہر مرکہ پر دوبارہ قبضہ کر لیا تھا۔

افریقی یونین کی فورسز نے اس شہر پر ساڑھے تین برس پہلے کنٹرول حاصل کیا تھا اور پانچ فروری کو وہ شہر سے نکل گئی تھیں۔

صومالیہ کے لوئر شیبلی خطے کے گورنر ابراہیم آدم نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی اے ایف پی کو بتایا تھا کہ الشباب نے پانچ فروری کو بغیر کسی مزاحمت کے شہر پر قبضہ کر لیا تھا۔

اسی بارے میں