یونان کے قریب تقریباً نو سو تارکین وطن کو بچا لیا گیا

تصویر کے کاپی رائٹ Frontex
Image caption ان تارکین وطن کا کس ملک سے تعلق ہے یہ ابھی معلوم نہیں ہو سکا ہے

یورپی یونین کے ادارے فرنٹیکس کا کہنا ہے کہ یونان کے جزیرے لیسبوس کے قریب تقریباً نو سو تارکین وطن کو بچا لیا گیا ہے۔

لیسبوس کی میٹیلین پورٹ اور ترکی کی ساحل کے درمیان ان تارکین وطن کو بلغاریہ کی ایک کشتی پر سوار کیا گیا جو معمول کے گشت پر تھی۔

فرنٹیکس کا کہنا ہے کہ اس کشتی پر تمام تارکین وطن کو سوار کیا گیا کیونکہ موسم سرما میں خراب موسم کے باعث سمندر کو عبور کرنا مشکل ہوتا ہے۔

خیال رہے کہ گذشتہ سال 2015 میں یورپی ممالک میں داخل ہونے والے تارکین وطن کی تعداد دس لاکھ سے زائد ہے۔

جمعرات کو فرنٹیکس نے بچائے جانے والوں کے بارے میں ٹوئٹر پر اعلان کیا تھا۔ فرنٹیکس نے ٹوئٹر پر بعض تارکین وطن کی تصاویر بھی شائع کیں جنھیں بعد میں بلغاریہ کی کشتی نے میٹیلین پورٹ پر پہنچا دیا۔

ان تارکین وطن کا کس ملک سے تعلق ہے اس حوالے سے ابھی تک معلوم نہیں ہو سکا ہے۔

گذشتہ سال افغانستان، عراق اور شام سے جنگ کی وجہ سے اپنے گھروں کو چھوڑ کر یونان کے راستے یورپ میں داخل ہونے والے تارکین وطن کی تعداد آٹھ لاکھ 50 ہزار سے زائد تھی۔

موسم گرما کے مہینوں میں روزانہ کی بنیادوں پر ترکی سے بحیرہ ایجیئن کو عبور کرنے کے بعد سات ہزار کے قریب تارکین وطن یونان پہنچتے تھے۔

اس خطرناک سفر کے دوران گذشتہ سال ہلاک ہونے والوں کی تعداد سات سو سے زیادہ تھی جبکہ رواں سال اب تک کم از کم ایک سو ہلاکتیں ہو چکی ہیں۔

اسی بارے میں