پناہ گزینوں کے شیلٹر میں آتشزدگی پر مقامی افراد خوش

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption کچھ لوگوں نے آگ بجھانے والے عملے کو آگ پر قابو پانے سے روکنے کی کوشش بھی کی

جرمن پولیس کے مطابق ملک کے مشرقی علاقے میں پناہ گزینوں کے لیے بنائی گئی ایک عمارت میں آگ لگنے پر مقامی لوگوں نے تالیاں بجا کر اپنی خوشی کا اظہار کیا ہے۔

بضطان کے شہر میں واقع ایک سابق ہوٹل کی اس عمارت کو پناہ گزین کی رہائش کے لیے تیار کیا جا رہا تھا جب اس میں آگ بھڑک اٹھی جس کے باعث عمارت کی چھت بری طرح متاثر ہوئی ہے۔

’ضرورت پڑے تو تارکین وطن کو گولی مار دیں‘

پولیس کے مطابق کچھ لوگوں نے آگ بجھانے والے عملے کو آگ پر قابو پانے سے روکنے کی کوشش بھی کی۔

حکام نے کہا ہے کہ آگ لگنے پر خوشی کا اظہار اور فائر برگیڈ کے عملے کے کام میں مداخلت کرنے والے مجرم ہیں۔

آگ لگنے کی وجہ ابھی واضح نہیں اور انتہا پسندوں کی جانب سے کیے جانے والے جرائم کی تحقیقات کرنے والے تفتیش کار اس معاملے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔

اس واقعے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے۔

خیال رہے کہ چند روز قبل ہی اسی طرح کے ایک اور واقعے میں پناہ گزین کی جرمنی آمد سے ناخوش مقامی افراد نے پناہ گزین کی بس کا راستہ روک کر نعرہ بازی کی تھی۔

یہ لوگ مطالبہ کر رہے تھے کہ پناہ گزین کو جرمنی میں پناہ نہ دی جائے۔

اسی بارے میں