دفتر میں پیار کے منفی اثرات

Image caption دفتر میں رومانس کے امکانات کافی زیادہ ہوتے ہیں

اکثر لوگ دفتر میں اپنے کسی ساتھی کے عشق میں مبتلا ہوجاتے ہیں اور ایک ساتھ زندگی گذارنے کی قسمیں کھائی جاتی ہیں۔

امریکہ میں ہونے والے ایک سروے کے مطابق چالیس فیصد لوگوں نے کبھی نہ کبھی اپنے دفتر کے کسی نہ کسی ساتھی کے ساتھ رومانس ضرور کیا ہے۔

ان رومانوی رشتوں میں سے ایک تہائی شادی میں بھی تبدیل ہو ئے ہیں۔

سروے کے مطابق جرمنی میں تقریباً ساٹھ فیصد لوگ اپنے دفاتر میں ہی رومانس کرتے ہیں جبکہ جاپان میں صرف تیس فیصد لوگ دفتر میں رومانس کرتے ہیں۔

لیکن کبھی آپ نے سوچا کہ دفتر میں محبت کی پینگیں بڑھانے کے بعد اگر اچانک رشتوں میں تلخی آجائے تو کیا ہوگا اور آفس میں اپنے کسی خوبصورت جونیئیر یا سینئیر ساتھی سے محبت کرنے میں کیا خطرات ہیں اور اس رشتے کو دفتر کے باقی لوگوں کے سامنے ظاہر کرنا ٹھیک ہے یا نہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ THINKSTOCK
Image caption یہ بات اپنے دیگر ساتھیوں سے چھپا کر رکھی جائے یا نہیں

ایک امریکی آئی ٹی کمپنی میں کام کرنے والی لڑکی کیلی فِن کو اپنے ایک ساتھی سے محبت ہوگئی۔ دونوں ایک ہی کمپنی کے الگ الگ محکموں میں کام کرتے تھے کافی دن تک انھوں نے اس بات کو دوسرے ساتھیوں سے چھپا کر رکھا۔

لیکن ایک موقع ایسا آیا جب ان دونوں کو ایک آؤٹ ڈور ٹرپ پر باہر جانے کا موقع ملا اور پھر ان کا رومانس چھپ نہ سک سکا۔ دونوں نے پہلے ہی اپنے سینیئر کو اس حقیقت سے آگاہ کرنا مناسب سمجھا کیونکہ وہ نہیں چاہتے تھے کہ اس کے بارے میں افواہیں پھیلیں۔

کیلی کا کہنا ہے کہ اگر ایسا ہو تو سینیئرز کو اس بارے میں آگاہ کر دینا چاہیے اور ساتھ ہی یہ بھی واضح کر دینا چاہیے کہ اس رشتے سے ان کے کام پر کوئی اثر نہیں پڑے گا۔

لیکن ہر کوئی کیلی کی بات سے اتفاق نہیں کرتا۔

امریکہ ہی میں ہونے والے ایک اور سروے کے مطابق دفتر میں رومانس کرنے والے ایک تہائی لوگوں نے اس بات کو اپنے باقی ساتھیوں سے چھپانا مناسب سمجھا۔

سروے کرنے والی کمپنی کی ایچ آر افسر دفتر میں رومانس میں احتیاط برتنے کا مشورہ دیتی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Thinkstock
Image caption آپکے رومانس کا اثر آپکے کام پر نہیں پڑنا چاہیے

ان کا کہناہے کہ آپ اس بات کو ظاہر کریں یا نہیں لیکن دفتر میں آپ کا رویہ پیشہ وارانہ ہونا چاہیے اور دوسرے ساتھیوں کے ساتھ برتاؤ میں بھی محتاط رہیں اور آپ کا کام اس سے متاثر نہ ہو۔

بوسٹن میں کریئر میجنمینٹ کمپنی کی ایلن وارلاس کہتی ہیں کہ دفتر میں کسی ساتھی کے ساتھ محبت ایک اچھا تجربہ ہے لیکن دفتر میں کھلے عام پیار کے اظہار سے پرہیز کریں اس سے آپ کے دوسرے ساتھیوں کو دقت ہو سکتی ہے۔ تو بہتر ہوگا کہ دفتر میں کام پر دھیان دیں کیونکہ دفتر ہم کام کرنے جاتے ہیں نہ کہ محبت کرنے۔

کسی ساتھی سے محبت ہونے کی صورت میں اپنے آفس کی پالیسی ضرور پڑھ لیں اگر آپ کو لگتا ہے کہ آفس کی پالیسی سے آپ کو یا پھر آپ کے ساتھی کو پریشانی کا سامنا ہو سکتا ہے تو یا اپنا محکمہ تبدیل کر لیں یا پھر نوکری۔ اس طرح آپ دفتری چہ میگوئیوں کا شکار ہونے سے بچ جائیں گے۔

محبت کےساتھ ہی بریک اپ یعنی پیار میں دل ٹوٹنے کا خدشہ بھی ہوتا ہے اور ایسے میں ایک ہی جگہ یا ایک ہی ٹیم میں کام کرتے ہوئے اس بریک اپ کو جھیلنا بہت مشکل ثابت ہو سکتا ہے۔

یہ سوچ لیں کہ بریک اپ کے بعد اپنے سابق محبوب کا ہر روز کس طرح سامنا کریں گے اور کیا آپ اس شخص سے ایک عام ساتھی جیسا برتاؤ کر پائیں گے۔

فرانس کی کریئر کنسلٹنٹ لارین ٹلبری کہتی ہیں کہ رشتے ختم ہونے کے بعد بھی پرانے عاشق سے پروفیشنل رشتہ رکھنا چاہیے حالانکہ یہ ایک بہت بڑا چیلنج ہو سکتا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Thinkstock
Image caption اس بارے میں اپنے آفس کی پالیسی جاننا ضروری ہے

ٹلبری کا کہنا ہے کہ انھوں نے اپنے کئی ساتھیوں کو محبت میں ناکامی کے بعد پریشان دیکھا ہے کیونکہ وہ بریک اپ سے صحیح انداز میں نپٹنے میں ناکام رہے۔

ان کا کہنا ہے کہ کام کے دوران ان کی توجہ اپنے محبوب اور دونوں کے ماضی کی باتوں پر جاتی ہے اور وہ دونوں ہی ایک دوسرے کے ساتھ عام رویہ اختیار نہیں کر پاتے کام پر دھیان نہیں رہتا اور اس سے ان کا کام اور کریئر خراب ہوتا ہے۔

ٹِلبری کہتی ہیں کہ اگر آپ ایک جذباتی انسان ہیں تو دفتر میں کسی کو دل نہ دیں۔

امریکہ کے مشگن میں رہنے والی روشیل سدرلینڈ کا کہنا ہے کہ انھیں اپنا جیون ساتھی ایک میگزین میں ملازمت کے دوران ملا۔

لیکن روشیل یہ بھی کہتی ہیں کہ اگر ان کا رشتہ شادی میں تبدیل نہ ہوا ہوتا تو شاید ان کے لیے مسئلہ ہوتا کیونکہ ایک ہی جگہ کام کرتے ہوئے بریک اپ کو جھیلنا بہت مشکل ہوتا ہے۔

اسی بارے میں