’خدا نہیں ہے‘ لکھنے پر قید کا سامنا

صلیب تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption خدا کے متعلق بیان پر اس شخص کو ایک سال قید تک کی سزا ہو سکتی ہے

جنوبی روس میں ایک شخص کو انٹرنیٹ پر یہ لکھنے کے لیے کہ ’خدا نہیں ہے‘ ممکنہ طور پر ایک سال قید کی سزا ہو سکتی ہے۔

سنہ 2014 میں ایک روسی سوشل نیٹ ورک سائٹ ویکونٹاکٹے پر جملوں کے تبادلے کے بعد دو افراد نے پولیس کو رپورٹ کیا کہ وکٹر کراسنو نے قابلِ اعتراض زبان استعمال کی ہے۔

ان سٹاروپول میں مقدمہ چلا کہ انھوں نے عبادت گاروں کے احساسات کو مجروح کیا ہے۔

اس طرح کی توہین کے قانون کو 2013 میں پنک بیندڈ پسی رائٹ کے اراکین کو جیل کی سزا دیے جانے کے بعد ختم کر دیا گیا تھا۔

سنہ 2012 میں پسی رائٹ بینڈ کی نادزیہدا ٹولوکونیکوا اور ماریا الکہینا کو ماسکو کے ایک اہم کیتھیڈرل میں احتجاجی گانا گانے کے جرم میں گرفتار کر کے سزا سنائی گئی تھی۔ اس سزا کی بعد میں بین الاقوامی طور پر بہت مذمت کی گئی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption سنہ 2012 میں پسی رائٹ بینڈ کی سنگرز کو گرجے میں احتجاجی گانا گانے پر سزا سنائی گئی تھی

ویکونٹاکٹے فیس بک کی طرح کی ایک سوشل نیٹ ورکنگ سائٹ ہے جو روسیوں میں بہت مقبول ہے۔ اس سائٹ پر وکٹر کراسنو نے بائبل کو بھی ’یہودیوں کی پریوں کی کہانیوں کا ایک مجموعہ‘ کہہ کر رد کیا تھا۔

ماہرِ لسانیات نے مدعیان کے ان الزامات کی حمایت میں کہا ہے کہ کراسنو کے بیانات ’عبادت کرنے والوں کے لیے توہین آمیز‘ تھے۔

اس سے متعلقہ قانون میں اس طرح کے مقدمات کے ایک سال قید کے کئی متبادل بھی موجود ہیں جیسا کہ تین لاکھ روبل (4083 ڈالر) جرمانہ یا 240 گھنٹے لازمی مشقت۔

اسی بارے میں