’موزمبیق سے ملبے والا ٹکڑا ایم ایچ 370 کا ہوسکتا ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption سمندر کی گہرائی تک کی جانے والی تلاش کے باوجود تاحال طیارہ اور اس کے تمام مسافر لاپتہ ہیں

ملائیشیا کے وزیر ٹرانسپورٹ کا کہنا ہے کہ اس بات کا ’قوی امکان‘ ہے کہ موزمبیق سے بوئنگ 777 کا ملنے والا ملبہ ملائشیا ایئرلائنز کی حادثے کا شکار ہونے والی پرواز فلائٹ ایم ایچ 370 کا ہے۔

ایک میٹر لمبا دھات کا ایک ٹکڑا ہفتہ وار چھٹیوں میں موزمبیق کے ساحل سمندر سے ملا تھا۔

مارچ 2014 کو ملائشیا ایئر لائنز کی کوالالمپور سے بیجنگ جانے والی پرواز ایم ایچ 370 لاپتہ ہوگئی تھی۔ لاپتہ ہونے والے طیارے میں 239 مسافر سوار تھے۔

آسٹریلیا کی سربراہی میں سمندر کی گہرائی تک کی جانے والی تلاش کے باوجود تاحال طیارہ اور اس کے تمام مسافر لاپتہ ہیں۔

ملائیشیا کے وزیر ٹرانسپورٹ لیو ٹیونگ نے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ ابتدائی اطلاعات کے مطابق اس بات کا ’قوی امکان ہے کہ موزمبیق سے ملنے والا ملبہ بی 777 کا ہے۔‘

تاہم ان کا کہنا تھا کہ ’میں سب سے گزارش کرتا ہوں کہ غیرضروری قیاس آرائی سے اجتناب کیا جائے کیونکہ ہم ابھی تک اس نتیجے پر نہیں پہنچے کہ ملبہ ایم ایچ 370 کا ہے۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ملائشیا کی ایوی ایشن ٹیمیں اپنے آسٹریلیوی ہم منصبوں کے ساتھ ملبے کی جانچ پڑتال کر رہی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Blaine Alan Gibson
Image caption امریکی شہری بلائن ایلن گبسن کا کہنا تھا کہ انھیں یہ ٹکڑا موزمبیق کے ساحل سے ملا

دوسری جانب آسٹریلیا کے انفراسٹرکچر اور ٹرانسپورٹ کے وزیر ڈیرن چیسٹر نے ایک بیان میں کہا ہے جس جگہ سے یہ ٹکڑا ملا ہے وہ ملبے کے سمندری بہاؤ کے ساتھ مماثلت رکھتا ہے اور ’جنوبی بحرہند میں ایم ایچ 370 کی تلاش کے علاقے کی توثیق کرتا ہے۔‘

ان کا کہنا تھا کہ اس ٹکڑے کو معائنے کے لیے آسٹریلیا منتقل کیا جاسکتا ہے۔

خیال رہے کہ اگر موزمبیق سے ملنے والے اس ٹکڑے کی تصدیق ہوجاتی ہے تو یہ لاپتہ طیارے کا ملنے والا دوسرا ٹکڑا ہوگا۔ گذشتہ برس بحرہند میں واقع ری یونین جزیرے سے جہاز کے پر کا ایک ٹکڑا ملا تھا۔

اسی بارے میں