آسٹریلوی شہری پر ڈوڈی الفائد کی فیراری جلانے کا الزام

تصویر کے کاپی رائٹ Australian Broadcasting Corp.
Image caption 1973 ماڈل کی سرخ رنگ کی فیراری ڈیٹونا گاڑی ڈوڈی الفائد کے استعمال میں رہی تھی

آسٹریلیا میں ایک شخص کو اس فیراری گاڑی کو نذرآتش کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے جو کسی وقت شہزادی ڈیانا کے دوست ڈوڈی الفائد کے استعمال میں تھی۔

ملبرن میں 15 لاکھ ڈالر سے زائد کی مالیت گاڑی جلائے جانے کے چار ماہ بعدجمعرات کو ایک مرد اور دو خواتین کو گرفتار کیا گیا ہے۔

یہ نادر گاڑی مرمت کی دکان سے چرائی جانے والی دو گاڑیوں میں سے ایک تھی۔

گرفتار کی جانے والی خواتین کو بغیر کسی الزام کے رہا کر دیا تاہم مقامی ذرائع ابلاغ کے مطابق کین رڈلی نامی شخص کو عدالت میں آتش زدگی اور دیگر الزامات کا سامنا ہوگا۔

جمعے کو اس مقدمے کے سماعت کے دوران عدالت کو بتایا گیا کہ ریمانڈ کے لیے زیر حراست رہنے والے کین رڈلی ممکنہ طور پر جیل میں نشہ نہ کرنے سے پیدا ہونے والی کیفیت کا شکار ہیں۔

مبینہ طور پر ملبرن کے مضافاتی علاقے برائیسائیڈ میں مشتبہ چوروں نے گاڑیاں مرمت کرنے والی دکان کا دروازہ توڑنے کے چار منٹ کے اندر چرا لی۔

نذرآتش کی جانے والی فیراری مبینہ طور پر معروف میوزک بینڈ پنک فلائیڈ کے روجر واٹرز اور نک میسن کے استعمال میں بھی رہی تھی اور اس کے موجودہ مالک میلبرن کے ایک ریستوران کے مالک ہیں۔

اسی بارے میں