’شمالی کوریا نے سمندر میں بیلسٹک میزائل داغے‘

تصویر کے کاپی رائٹ KCNA
Image caption امریکی صدر براک اوباما نے شمالی کوریا پر نئی پابندیاں لگانے کا ایک ایگزیکٹو آرڈر جاری کیا

جنوبی کوریا اور امریکی حکام نے دعوی کیا ہے کہ شمالی کوریا نے سمندر میں دور مار کرنے والے بیلسٹک میزائل داغے ہیں۔

’شمالی کوریا نے چھوٹے جوہری بم بنا لیے‘

حکام کے مطابق، میزائل شمالی کوریا کے مشرقی ساحل سے داغے گئے۔ یہ میزائل 800 کلومیٹر دور سمندر میں گرا۔

امریکی محکمہ دفاع کے ایک ترجمان نے کہا کہ ایک دوسرا میزائل بھی داغا گیا ہے۔

شمالی کوریا نے امریکہ اور جنوبی کوریا کے ان دعووں پر کوئی تبصرہ نہیں کیا ہے۔

جنوبی کوریا نیوز ایجنسی يونہاپ کے مطابق، دوسرا میزائل درمیانی فاصلے کا روڈوگ میزائل تھا، جسے سڑک پر چلنے والی کسی گاڑی سے چھوڑا گیا۔

روڈوگ 1،300 کلومیٹر دور تک جا سکتا ہے اور اس کی زد میں جنوبی کوریا اور جاپان کے کچھ حصے آ سکتے ہیں۔

امریکی محکمہ دفاع کی لیفٹیننٹ کرنل مشیل بیلڈاذا نے کہا، ’ہم شمالی کوریا کو ان کی کارروائیوں سے پرہیز کی اپیل کرتے ہیں، جن سے علاقے میں کشیدگی اور بڑھ سکتی ہے۔‘

اس سے پہلے امریکی صدر براک اوباما نے شمالی کوریا پر نئی پابندیاں لگانے کا ایک ایگزیکٹو آرڈر جاری کیا تھا۔

یہ حکم شمالی کوریا کی جانب سے 6 جنوری 2016 کو کیے گئے مبینہ جوہری تجربے اور 7 فروری کے سیٹلائٹ لانچ کے بعد جاری کیا گیا۔

اس کے ساتھ ہی امریکہ میں شمالی کوریا کی حکومت کے اثاثے ضبط کر لیے گئے ہیں۔ اس کے علاوہ شمالی کوریا میں امریکی سرمایہ کاری اور وہاں سے کسی طرح کی درآمد پر بھی پابندی لگا دی گئی ہے۔

شمالی کوریا سے تعلق رکھنے پر غیر امریکیوں سمیت کسی بھی شخص کو بلیک لسٹ کیا جا سکتا ہے۔

اسی بارے میں