ترکی: ’دولت اسلامیہ‘ سے تعلق کے شبہے میں دس گرفتار

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption یہ گرفتاریاں استنبول شہر میں تین روز قبل بم دھماکے کے بعد کی گئی ہیں جس میں چار افراد ہلاک ہوئے تھے

ترکی میں مقامی میڈیا کے مطابق سکیورٹی فورسز نے شام کی سرحد پر شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ سے تعلق رکھنے والے دس مشتبہہ شدت پسندوں کو گرفتار کیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق جن افراد کو گرفتار کیا گیا ہے اس میں سے ایک خود کش دھماکے والی بیلٹ بھی پہنے ہوئے تھا۔

یہ گرفتاریاں استنبول شہر میں تین روز قبل بم دھماکے کے بعد کی گئی ہیں جس میں چار افراد ہلاک ہوئے تھے۔

مقامی خبر رساں ایجنسی دوغان نے ایک فوجی ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ مشتبہ افراد کو جنوبی ریاست غزیانتیپ سے اس وقت گرفتار کیا گیا جب وہ سرحد پار کرکے ترکی میں داخل ہونے کی کوشش کر رہے تھے۔

اس ایجنسی کے مطابق جس گروپ کو حراست میں لیا گیا ہے اس میں ایک شخص نے دھماکہ خیز مواد سے لوڈ ایک جیکیٹ پہن رکھی تھی جو کسی بھی وقت دھماکے کے لیے تیار تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ DHA
Image caption پولیس سنیچر کو استنبول میں ہونے والے بم دھماکے کے سلسلے میں بعض مشتبہ افراد کی تلاش میں ہے

ایجنسی نے ان افراد کی جو تصاویر شا‏ئع کی ہیں اس میں انہیں اپنے سر کے پیچھے بندھے ہاتھوں میں دیکھا جا سکتا ہے اور اس میں ایک دھماکہ خیز بیلٹ بھی ہے۔

پولیس سنیچر کو استنبول میں ہونے والے بم دھماکے کے سلسلے میں بعض مشتبہ افراد کی تلاش میں ہے اور اسی تلاشی مہم کے دوران ان افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔

استنبول میں ہونے والے دھماکے میں چار غیرملکی بشمبول ایرانی اور اسرائیلی ہلاک ہوئے تھے جبکہ 39 افراد زخمی میں ہوئے تھے۔

استنبول میں ہونے والے اس حملے کی ذمہ داری کسی بھی گروپ نے قبول نہیں کی ہے تاہم حکومت کا کہنا ہے جس مقامی گروپ نے یہ دھماکہ کیا تھا اس کا تعلق دولت اسلامیہ سے ہے۔

اسی بارے میں