’بہترین عوامی بیت الخلا‘

تصویر کے کاپی رائٹ BestPublicToilet.org
Image caption اس بیت الخلا کا استعمال کرنے والوں کو مقامی کرنسی میں 200 واتو یعنی ڈیڑھ پاؤنڈ ادا کرنے پڑتے ہیں

جنوبی بحرالکاہل کے ایک جزیرے وینواتو میں ایک ایسا عوامی بیت الخلا بنایا گیا ہے جس کے بارے میں کہا جا رہا ہے کہ یہ ’علاقے کا بہترین عوامی بیت الخلا ہے‘۔

اس اقدام کا مقصد ان کے لیے ایسے مقامی منصوبوں کے لیے مزید امداد حاصل کرنا ہے۔

* لفٹوں میں بیت الخلا اور پینے کا پانی

ریڈیو نیوزی لینڈ کی رپورٹ کے مطابق ملک کے مرکزی جزیرے اور دارالحکومت پورٹ وِلا کے بالمقابل واقعے اس گاؤں پاننگیسو میں یہ بیت الخلا بنایا گیا ہے اور امید ہے کہ یہ جزیرے پر سفر کرنے والوں کے لیے یہ سہولت کا باعث ہوگا۔

دکان دار اس بات سے نالاں تھے کہ گاڑیاں ان کی دکانوں کے آگے کیوں نہیں رکتیں انھوں ڈرائیوروں کو بریکیں لگانے پر مجبور کرنے کے لیے ایک ترکیب سوچی۔

اس منصوبے کے حامی ایک شخص رابرٹ لاتمیر کا ریڈیو سے بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ ’سڑک پر لگے بورڈ جس پر لکھا ہو کہ ’جنوبی بحرالکاہل کا بہترین بیت الخلا‘ اس سے زیادہ کوئی چیز دماغ کو چوکس نہیں کرتی۔ انھوں نے بتایا کہ ایک دفعہ سیاح وہاں رک جائیں تو وہ دیگر خدمات اور علاقے کی سیر کی پیشکش بھی کرتے ہیں۔

اس بیت الخلا کا استعمال کرنے والوں کو مقامی کرنسی میں 200 واتو یعنی ڈیڑھ پاؤنڈ ادا کرنے پڑتے ہیں۔ لیکن بڑے گروہ کے ساتھ آنے والوں کو 75 فیصد ڈسکاؤنٹ دیا جاتا ہے۔ مقامی افراد کو 50 واتو ادا کرنے پڑتے ہیں۔

لاتمیر کا کہنا تھا کہ ’اگر آپ نے پورٹ وِلا میں عوامی بیت الخلا کا استعمال کیا ہے تو آپ یہاں گاؤں میں بخوشی 50 واتو دینے کو تیار ہوں گے۔‘

مقامی افراد اس سہولت پر بہت نازاں ہیں جس کی اب اپنی ایک ویب سائٹ بھی ہے جس میں یہ وضاحت کی گئی ہے کہ یہ سہولت صرف سیاحوں سے رقم بٹورنے کے لیے نہیں ہے۔ سیاحوں سے حاصل ہونے والی رقم کو اس گاؤں کے دیگر اشد ضروری منصوبوں میں لگایا جائے گا جن میں تعلیم ، پانی ذخیرہ کرنا اور ملازمتوں کے لیے تربیت شامل ہے۔

بیت الخلا بنانے والوں نے ایک نعرہ بھی اپنایا ہے ’It's the place to go when you need to go‘ یعنی یہ وہ ’یہ جانے کی جگہ ہے، جب جانے کی حاجت ہو‘۔

اسی بارے میں