’خود کو خوف اور مایوسی میں قید نہ کریں‘

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption پوپ فرانسس نے کہا کہ ’آج اپنی امید کو منانے کا دن ہے۔ آج یہ بہت ضروری ہے

کیتھولک عیسائیوں کے روحانی پیشوا پوپ فرانسس نے مذہبی تہوار ایسٹر کے موقعے پر عیسائیوں کے نام پیغام میں کہا ہے کہ خود کو خوف اور مایوسی میں قید نہ کریں۔

انھوں نے امید کا یہ پیغام برسلز میں ہونے والے حملوں اور یورپ پر اس کے اثرات کے تناظر میں دیا ہے۔

ویٹیکن سے اپنے پیغام میں پوپ نے کہا کہ ’آئیں ہم اندھیروں اور خوف کو اجازت نہ دیں کہ وہ ہمیں ہمارے راستے سے ہٹائیں اور ہمارے دلوں پر قابض ہوں۔‘

ان کا یہ پیغام جمعے کو برسلز حملوں کے مذمتی بیان کا تسلسل ہے۔

بہت سے لوگوں نے برسلز حملوں کی وجہ سے روم کا سفر ملتوی کر دیا تھا تاہم اس کے باوجود ہفتے کی شام ویٹیکن میں سینٹ پیٹر بیسیلیکا بھرا ہوا تھا۔

اپنے خطاب میں پوپ فرانسس نے کہا کہ ’آج اپنی امید کو منانے کا دن ہے۔آج یہ بہت ضروری ہے۔‘

پوپ ایک اندھیرے بیسیلیکا میں داخل ہوئے جہاں صرف ایک موم بتی روشن تھی۔ جب وہ قربان گاہ پہنچے تو بیسیلیکا کی روشنیاں جلا دی گئیں۔ یہ حضرت عیسیٰ کے دوبارہ جی اٹھنے کی علامت ہے۔

اسی بارے میں