’ٹرمپ خارجہ پالیسی اور عالمی امور سے انجان ہیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption صدر اوباما نے واشنگٹن میں جوہری سلامتی سے متعلق کانفرنس کے موقعے پر کہا ہے کہ دنیا نئے امریکی صدر سے ’متانت اور وضاحت‘ کی توقع رکھتے ہیں

امریکہ کے صدر براک اوباما نے کہا ہے کہ صدارتی دوڑ میں ریبپلیکنز کے صف اوّل کے امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کو خارجہ پالیسی کے بارے میں زیادہ علم نہیں رکھتے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’ڈونلڈ ٹرمپ امریکہ کی خارجہ پالیسی اور دیگر عالمی امور کے بارے میں زیادہ نہیں جانتے۔‘

*’اسقاط حمل پر عورت کو سزا‘ ٹرمپ بیان سے پھر گئے *’ٹرمپ کی صدارت دنیا کے لیے بڑا خطرہ‘

براک اوباما نے ان خیالات کا اظہار ڈونلڈ ٹرمپ کے اس بیان کے بعد کیا ہے جس میں انھوں نے کہا تھا کہ امریکہ کو جاپان اور جنوبی کوریا سے فوج واپس بلا لینی چاہیے۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا کہ ’ان دو بڑے اتحادی ملکوں سے فوج واپس بلا کر اس کے بدلے جوہری ہتھیار نصب کر دینے چاہیئں۔‘

دونوں ممالک نے اس خیال پر خدشات کا اظہار کیا تھا۔

صدر اوباما نے واشنگٹن میں جوہری سلامتی سے متعلق کانفرنس کے موقعے پر کہا ہے کہ دنیا نئے امریکی صدر سے ’متانت اور وضاحت‘ کی توقع رکھتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters Getty
Image caption براک اوباما کا کہنا تھا کہ ڈونلڈ ٹرمپ امریکہ کی خارجہ پالیسی اور دیگر عالمی امور کے بارے میں زیادہ نہیں جانتے

ڈونلڈ ٹرمپ کے متنازع اور جارحانہ بیان کے باعث تحقیقاتی ادارے اکونومسٹ انٹیلیجنس یونٹ ( ای آئی یو) کی ایک تحقیق کے مطابق اگر امریکی ارب پتی ڈونلڈ ٹرمپ امریکہ کے صدر بن گئے تو یہ دنیا کو درپیش 10 بڑے خطرات میں سے ایک خطرہ ہو سکتا ہے۔

ای آئی یو کی جانب سے جاری کی گئی درجہ بندی میں ٹرمپ کی صدارت کو برطانیہ کے یورپی یونین سے اخراج اور جنوبی بحیرۂ چین میں لڑائی سے بڑا خطرہ قرار دیا گیا۔ادارے نے خبردار کیا تھا کہ ٹرمپ کو صدارت ملنے کا مطلب عالمی معیشت میں بےچینی اور امریکہ میں سیاسی اور سکیورٹی سے متعلق خطرات میں اضافہ ہو سکتا ہے۔

اسی بارے میں