فلپائن: اسلامی شدت پسندوں سے لڑائی میں 18 فوجی ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption 100 سے زائد جنگجوؤں سے لڑائی کے دوران کم سے کم چار سپاہیوں کا لڑائی کے دوران سر قلم کیا گیا

فلپائن کی فوج کا کہنا ہے کہ ملک کہ جنوبی میں اسلامی عسکریت پسندوں سے لڑائی میں کم سے کم 18 فوجی ہلاک ہو گئے ہیں۔

فوجی بیان کے مطابق او سیاف نامی گروہ کے ساتھ بیزیلان جزیرے پر سنیچر ہونے والی ان جھڑپوں میں کم سے کم 50 فوجی زخمی بھی ہوئے ہیں۔

* فلپائن میں فائرنگ سے دو چینی سفارت کار ہلاک

فوج کے مطابق لڑائی میں پانچ عسکریت پسند ہلاک ہوئے۔

اطلاعات ہیں کہ فوج نے اس گروہ کے سربراہ کو نشانہ بنانے کی کوشش کی تھی جس کے نام نہاد دولتِ اسلامیہ سے اتحاد کا اعلان کیا تھا۔

امریکی حکومت نے تنظیم کے سربراہ اسنیلون ہیپیلون کی گرفتاری میں مدد دینے پر 50 لاکھ ڈالر انعام کا اعلان رکھا ہے۔

خبر رساں ادارے اے ایف نے مقامی فوجی ترجمان کے حوالے سے بتایا ہے کہ 100 سے زائد جنگجوؤں سے لڑائی کے دوران کم سے کم چار سپاہیوں کا لڑائی کے دوران سر قلم کیا گیا۔

فوج کے ترجمان نے ڈی زیڈ آر ایچ ریڈیو کو بتایا کہ ’ہمارا گروہ ان پر حملہ کرنے کے لیے جا رہا تھا کہ گھات لگائے عکسریت پسندوں نے حملہ کر دیا۔‘

ان کا مزید کہنا تھا کہ ’دشمن اونچی جگہوں پر موجود تھے اس لیے ہمارے فوجی چطپنے کے لیے جتنا بھی دور بھاگےانھیں جدید اسلحے اور بارود سے نشانہ بنا لیا گیا۔‘

فوجی ترجمان میجر فیلمون ٹین کا کہنا تھا کہ حکومت نے ابو سیاف گروہ کے خلاف کارروائی کا فیصلہ ان کی جانب سے غیر ملکیوں کے اغوا کی سلسلہ وار وارداتوں کے بعد کیا۔

تنظیم نے کینیڈا اور ناروے کے شہریوں سمیت 18 غیر ملکیوں کو اغوا کر رکھا ہے۔

ابو سیاف نامی یہ گروہ سنہ نوے کی دہائی میں القاعدہ کے تعاون سے بنا تھا۔

اسی بارے میں