جاپان میں پھر شدید زلزلہ، 18 ہلاک، امدادی کام جاری

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption درجنوں افراد کے تاحال ملبے تلے دبے ہونے کا خدشہ بھی ظاہر کیا جارہا ہے

جاپان میں حکام کے مطابق ملک کے جنوبی علاقے كماموٹو میں ایک بار پھر شدید زلزلہ آیا ہے۔

زلزلے کے بعد امدادی کارروئیاں جاری ہیں اور 20 ہزار کے قریب فوجی اہکاروں کو متاثرہ علاقے میں بھیجا جارہا ہے۔ اطلاعات کے مطابق حالیہ زلزلے میں کم از کم 18 افراد ہلاک اور سینکڑوں زخمی ہوئے ہیں۔

درجنوں افراد کے تاحال ملبے تلے دبے ہونے کا خدشہ بھی ظاہر کیا جارہا ہے۔

اس سے پہلے جمعرات کو آنے والے زلزلے میں کم سے کم نو افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

حکام کا کہنا ہے کہ جمعے کو كماموٹو میں آنے والے زلزلے کی شدت 7.3 تھی اور اس میں کم سے کم تین افراد ہلاک اور سینکڑوں زخمی ہو گئے۔ اس زلزلے کے کچھ ہی دیر بعد ایک دوسرا جھٹکا بھی آیا۔

ان کے مطابق کماموٹو میں ایک ڈیم کے تباہ ہونے کے بعد ایک گاؤں کو خالی کروا لیا گیا ہے۔

زلزلے کے بعد سونامی کی وارننگ جاری کی گئی تھی لیکن 50 منٹ کے بعد یہ وارننگ واپس لے لی گئی۔

ٹوکیو میں موجود بی بی سی کے نامہ نگار روپرٹ وینگ فیلڈ کا کہنا ہے کہ جمعے کو آنے والا نیا زلزلہ زیادہ شدید تھا اور اس سے زیادہ علاقہ متاثر ہوا ہے۔

نامہ نگار کے مطابق رات کا وقت ہونے کی وجہ سے اس بات کا اندازہ لگانا مشکل ہے کہ اس سے کتنا نقصان ہوا ہے۔

حکام کے مطابق ساحل کے قریب واقع ایک قصبہ بہت زیادہ متاثر ہوا ہے اور اس بات کا خدشہ ہے کہ قصبے میں موجود ایک سٹی ہال گر بھی سکتا ہے۔ حکام کے مطابق ایک ہسپتال کو محفوظ نہ ہونے کی وجہ سے خالی کروایا لیا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

نامہ نگار کے مطابق زلزلے کے بعد ہزاروں افراد بھاگ کر سٹرکوں اور پارکوں میں چلے گئے اور ان کے چہروں پربدحواسی اور خوف کا منظر تھا۔

بعض اطلاعات کے مطابق متعدد افراد عمارتوں میں پھنسے ہوئے ہیں اور معمر افراد کے لیے ایک گھر میں کم سے کم 60 افراد موجود ہیں۔

جاپان میں جمعرات کو آنے والے زلزلے میں کم سے کم نو افراد ہلاک اور 1,000 سے زائد زخمی ہوئے تھے۔

جاپان میں اکثر زلزلے آتے رہتے ہیں لیکن عمارتوں کے متعلق سخت قوانین کی وجہ تباہی کم ہی ہوتی ہے۔

جاپان کے زلزلے سے متعلق معلومات فراہم کرنے والے ادارے کا کہنا ہے کہ جمعرات کو 6.2 کی شدت سے آنے والے زلزلے سے کچھ علاقے متاثر ضرور ہوئے تھے تاہم سنہ 2011 میں شمال مشرقی جاپان میں آنے والے زلزلے اور اس کے بعد سونامی آنے سے فوکوشیما ڈائچی جوہری پلانٹ بھی بری طرح متاثر ہوا تھا۔

اسی بارے میں