ہیتھرو ہوائی اڈے کے قریب طیارے اور ’ڈرون‘ کی ٹکر

Image caption برٹش ائیر ویز کے ترجمان کا کہنا ہے کہ طیارہ بہ حفاظت لینڈ کر گیا ہے

لندن کی میٹرو پولیٹن پولیس کا کہنا ہے کہ ہیتھرو ایئر پورٹ پر لینڈنگ سے قبل طیارہ ایک ڈرون کے ساتھ ٹکرایا ہے تاہم تمام مسافر محفوظ رہے ہیں۔

جینیوا سے لندن کے آنے والی برٹش ایئر ویز کی اس پرواز میں 132 مسافر اور پانچ عملے کے ارکان سوار تھے۔

لینڈنگ کے بعد طیارے کے پائیلٹ نے بتایا کہ شاید ایئر بس اے 320 کے سامنے والے حصے سے کوئی ڈرون ٹکرایا تھا۔

ہیتھرو ہوائی اڈے کی ایویئشن پولیس نے تحقیقات کا آغاز کر دیا ہے۔ تاہم پولیس کے مطابق فی الحال کوئی گرفتاری عمل میں نہیں لائی گئی ہے۔

برٹش ائیر ویز کے ترجمان کا کہنا ہے کہ ’ہمارے طیارے نے بہ حفاظت لینڈ کر گیا ہے۔ ہمارے اینجینیئرز نے اس کا مکمل جائزہ لیا ہے اور وہ اپنی اگلی پرواز کے لیے تیار ہے۔‘

ترجمان نے مزید کہا کہ ’ایئر لائن پولیس کو تحقیقات میں ہر قسم کی مدد فراہم کرے گی۔‘

اس سے قبل رواں سال کے آغاز میں انٹرنیشنل ائیر ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن کے سربراہ ٹونی ٹائلر نے وارننگ جاری کی تھی کہ ’عام لوگوں کی جانب سے ڈرون کے استعمال سے طیاروں کو خطرہ لاحق ہو سکتا ہے۔‘

ٹونی ٹائلر نے مطالبہ کیا تھا کہ ڈرونز اڑانے کے لیے قانون سازی کی جائے اس سے قبل کے کوئی خطرناک حادثہ پیش آجائے۔

سول ایویئشن اتھارٹی کے ترجمان کا کہنا ہے کہ ’ہوائی اڈوں کے قریب ڈرون اڑانا بالکل ناقابل قبول ہے۔ جو بھی قانون کی خلاف ورزی کرے گا انھیں سخت سزا کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے جس میں جیل بھی شامل ہے۔‘

اسی بارے میں