اسرائیل نے غزہ سے آنے والی ’نئی‘ سرنگ ڈھونڈ لی

سرنگ تصویر کے کاپی رائٹ Israeli Defence Force
Image caption سرنگ کے دونوں طرف کنکریٹ لگائی گئی ہے

اسرائیل کی فوج کا کہنا ہے کہ اس نے ایک سرنگ دریافت کی ہے جو غزہ کی پٹی سے کئی میٹر اسرائیلی علاقوں میں جاتی تھی۔

ایک بیان کے مطابق یہ سرنگ فلسطینی شدت پسند گروہ حماس نے بنائی تھی تاکہ اسرائیل کے اندر جا کر دہشت گرد حملے کیے جا سکیں۔

تاہم حماس نے کہا ہے کہ اسرائیل نے ایک پرانی سرنگ دریافت کی ہے۔

سنہ 2014 میں اسرائیلی فوجیوں اور جنگجوؤں کے درمیان غزہ میں ہونے والی تباہ کن جنگ کے بعد اس طرح کی پہلی سرنگ ملی ہے۔

50 دنوں کی جنگ میں حماس کے جنگجوؤں نے چار مرتبہ سرنگیں استعمال کر کے اسرائیلی علاقوں میں حملے کیے اور 12 فوجیوں کو ہلاک کیا تھا جبکہ اسرائیلی فوجیوں نے 30 سے زیادہ سرنگیں تباہ کی تھیں۔

اقوامِ متحدہ کے مطابق اس لڑائی میں 2251 فلسطینی ہلاک ہوئے تھے جن میں سے 1462 عام شہری تھے، جبکہ 11231 افراد زخمی ہوئے تھے۔ غزہ میں کل 18000 گھر بھی تباہ ہوئے تھے یا انھیں بہت نقصان پہنچا تھا۔

Image caption حماس کے جنگجو سرنگوں کو اسلحہ سپلائی کرنے کے لیے استعمال کرتے تھے

اسرائیل میں 67 فوجی اور چھ عام شہری ہلاک ہوئے تھے جبکہ 1600 زخمی ہوئے تھے۔ غزہ سے لانچ کیے گئے راکٹوں نے اسرائیل میں کئی گھروں اور عمارتوں کو نقصان پہنچایا تھا۔

جنگ کے بعد اسرائیلی فوج نے کہا تھا کہ وہ ایسی ٹیکنالوجی بنا رہے ہیں جس سے حماس کی سرنگوں کا نیٹ ورک دوبارہ بنانے کی صلاحیت کو روکا جا سکے۔

پیر کو جاری ہونے والے فوجی بیان کے مطابق انٹیلیجنس، ٹیکنالوجی اور زمینی فورسز کی مشترکہ کوششوں کی وجہ سے جنوبی اسرائیل میں حالیہ دریافت ہوئی ہے۔

فوج کے ترجمان لیفٹیننٹ کرنل پیٹر لرنر نے کہا کہ بدنما سچ یہ ہے کہ حماس نے دہشت اور موت کی سرنگوں پر لاکھوں ڈالر لگانے کا کام جاری رکھا ہے۔

’اسرائیل میں ملنے والی سرنگیں ایک مرتبہ پھر حماس کی بے شکل ترجیحات اور تشدد کے آلات میں سرمایہ کاری کے جاری عزم کی نشاندہی کرتی ہیں۔‘

کرنل لرنر نے کہا کہ سرنگ 100 سے 130 فٹ تک گہری ہے اور غزہ سے 3.5 میل دور سفا کی آبادی کے قریب دریافت ہوئی ہیں۔

انھوں نے کہا کہ تعمیر نئی ہے، کنکریٹ بچھائی گئی ہے اور بجلی کی سپلائی، وینٹیلیشن (ہوا کی آمدو رفت کا نظام) اور ریل کی پٹری لگائی گئی ہے۔ لیکن اس میں باہر جانے کا راستہ نہیں۔

تاہم حماس کا دعویٰ ہے کہ اسرائیلی فوج نے سرنگوں کے خلاف پراجیکٹ میں امریکی کی حمایت کو برقرار رکھنے کے لیے پرانی سرنگوں کو ڈھونڈنے کے بعد یہ اعلان کیا ہے۔

حماس سے تعلق رکھنے والی ایک ویب سائٹ الماجد نے رپورٹ کیا ہے کہ سرنگ کو دو سال پہلے استعمال کیا گیا تھا۔

اسی بارے میں