ٹیڈ کروز اور جان کیسک ٹرمپ کے خلاف متحد

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ ٹیڈ کروز اور جان کیسک کے درمیان اس معاہدے کو اتنی تاخیر ہو گئی ہے کہ اب ٹرمپ کو روکنا مشکل ہے

رپبلکن پارٹی کی صدارتی نامزدگی کی دوڑ میں شامل دو امیدواروں نے اعلان کیا ہے کہ وہ اپنے حریف ڈونلڈ ٹرمپ کے خلاف مشترکہ حکمتِ عملی ترتیب دیں گے۔

ٹیڈ کروز اوریگن اور نیو میکسیکو ریاستوں میں انتخابی مہم ترک کر کے انڈیانا میں جان کیسک کی مدد کریں گے۔

ڈونلڈ ٹرمپ کو مندوبین کی دوڑ میں واضح برتری حاصل ہے، تاہم انھیں نامزدگی حاصل کرنے کے لیے 1237 مندوبین کی ضرورت ہے اور وہ اس سے ابھی دور ہیں۔

اگر وہ اس ہدف تک پہنچنے میں ناکام رہے تو رپبلکن پارٹی کے مشترکہ کنونشن میں رہنما فیصلہ کریں گے کہ اس سال نومبر میں ہونے والے انتخابات میں پارٹی کا امیدوار کون ہو گا۔

کروز اور کیسک نے تقریباً ایک ساتھ نشر ہونے والے بیانات میں مشترکہ حمکتِ عملی کا اعلان کیا۔

ٹیڈ کروز کی انتخابی مہم کے مینیجر جیف رو نے کہا: ’اگر ڈونلڈ ٹرمپ نومبر میں صدارتی امیدوار ہوئے تو یہ رپبلکن پارٹی کے لیے تباہ کن ہو گا۔ ٹرمپ نہ صرف کلنٹن اور سینڈرز کے ہاتھوں برے طریقے سے ہاریں گے، بلکہ وہ رپبلکن پارٹی کو بھی ایک نسل پیچھے دھکیل دیں گے۔‘

جان کیسک کے مشیر جان ویور نے کہا: ’ہمارا ہدف یہ ہے کہ کلیولینڈ میں کھلا کنونشن منعقد ہو جہاں امید ہے کہ وہی امیدوار ابھر کر سامنے آئے جو پارٹی کو متحد رکھنے اور نومبر کے انتخابات جیتنے کی اہلیت رکھتا ہو۔‘

رپبلکن پارٹی کے بعض ارکان اس معاہدے کے لیے کئی ہفتوں سے زور دے رہے تھے لیکن تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ اسے آتے آتے اتنی تاخیر ہو گئی ہے کہ اب ٹرمپ کو روکنا مشکل ہے۔

ادھر ٹرمپ نے ٹویٹ کی: ’آہا، ابھی ابھی خبر آئی ہے کہ جھوٹے ٹیڈ اور کیسک مجھے امیدواری سے باز رکھنے کے لیے مل کر سازش کر رہے ہیں۔ شدید مایوسی!

’جھوٹے ٹیڈ اور کسیک ریاضیاتی اعتبار سے مردہ اور شدید مایوس ہیں۔ ان کے عطیہ کنندگان اور خصوصی گروپ ان سے خوش نہیں ہیں۔ افسوس!‘

ڈونلڈ ٹرمپ بارہا کہہ چکے ہیں کہ جماعت کا نامزدگی کا عمل ان کے خلاف اور اسٹیبلشمنٹ کی پسندیدہ شخصیات کے حق میں ’دھوکہ دہی‘ پر مبنی ہے۔

تاہم انھوں نے گذشتہ ہفتے رپبلکن پارٹی کے رہنماؤں کے ساتھ بند کمرے میں ہونے والی ملاقات میں وعدہ کیا تھا کہ وہ اپنا تاثر بہتر بنانے کی کوشش کریں گے۔

انڈیانا میں تین مئی، اوریگن میں 17 مئی، جب کہ نیو میکسیکو میں سات جون کو پرائمری انتخابات منعقد ہوں گے۔

اسی بارے میں