البرٹا میں آگ مزید علاقوں تک پھیل گئی

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption آگ پہلے سے پانچ گنا زیادہ بڑھ گئ ہے

کینیڈا کے صوبے البرٹا میں فورٹ مک مرے کے جنگلات میں لگنے والی آگ 850 مربع کلومیٹر تک پھیل گئی ہے جس کے بعد شہر کے شمال میں نقل مکانی کرنے والے آٹھ ہزار متاثرین کو فضائی ریسکیو آپریشن سے دوبارہ محفوظ مقامات پر منتقل کیا جا رہا ہے۔

حکام کے مطابق آگ سے متاثرہ رقبے میں پانچ گنا اضافہ ہوا ہے اور یہ صوبے کے جنوبی علاقوں تک پھیل گئی ہے جس کی وجہ سے فورٹ مک مرے سے ان علاقوں میں نقل مکانی کرنے والے آٹھ ہزار افراد کو محفوظ مقامات پر منتقل کیا جا رہا ہے۔

حکام کے مطابق چار ہزار افراد کو فوجی اور سول جہازوں کی مدد سے منتقل کیا جا چکا ہے جبکہ باقی چار ہزار افراد کو بھی آئندہ چند گھنٹوں کے دوران منتقل کر دیا جائے گا۔

فورٹ مک مرے میں جنگی آگ کی وجہ سے شہر کی 88 ہزار افراد پر مشتمل تمام آبادی کو انخلا کا حکم دیا گیا تھا اور جس کے بعد اکثریت نے جنوب جبکہ متعدد افراد نے شمالی علاقے کا رخ کیا تھا۔

البرٹا کی وزیِر اعلیٰ ریچل نوٹلی کا کہنا تھا کہ تیز ہواؤں کی وجہ سے آگ پھیلتی جا رہی ہے لیکن یہ ’قابو میں ہے‘۔

انھوں نے خبردار کیا کہ فورٹ مک مرے کے رہائشیوں کو اپنے گھروں میں واپسی کے لیے لمبا انتظار کرنا پڑے گا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption لوگوں کو دوبارہ نقل مکانی کا حکم دیا گیا

مقامی انتظامیہ کا کہنا تھا کہ جنوب کے شہری علاقوں میں متاثرین کی بہتر طریقے سے مدد کی جا سکتی ہے ۔

یہ نقل مکانی البرٹا کی تاریخ کی سب سے بڑی جبری نقل مکانی ہے۔

آگ سے کسی بھی شخص کے زخمی ہونے کی اطلاعات تاحال موصول نہیں ہوئی ہیں لیکن شہر کے خارجی راستوں پر شہریوں کے انخلا کی وجہ سےگاڑی کے ایک حادثے میں متعدد ہلاکتوں کی رپورٹ ملی ہیں۔

’البرٹا ایمرجنسی مینجمنٹ ایجنسی‘ کے ایگزیکٹیو ڈائریکٹر سکاٹ لونگ نے آگ لگنے کے واقعے کو بدترین قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس پر قابو پانے کے لیے بارشوں کی ضرورت ہے۔

کم درجہ حرارت اور بارش کی پیشنگوئی سے آگ پر قابو پانے کی امید بڑھ گئی ہے۔

البرٹا کے حکام کا کہنا ہے کہ آگ سے فورٹ مک مرے میں 1600 عمارتیں تباہ ہو چکی ہیں جبکہ خطرہ ہے کہ یہ مزید بے قابو ہو جائے گئی

اسی بارے میں