شامی شہر حلب سے اغوا ہونے والے تین ہسپانوی صحافی رہا

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

سپین کی حکومت کا کہنا ہے کہ تین ہسپانوی صحافی جنھیں گذشتہ سال شام میں اغوا کر لیا گیا تھا کو رہا کر دیا گیا ہے۔

اینتونیو پیمپلیگا، جوز مینیول لوپیز اور اینجل ساسترے دس ماہ قبل شمالی شہر حلب سے لاپتہ ہو گئے تھے۔

شامی شہر حلب پر باغی گروہوں جن میں خود کو دولت اسلامیہ کہلانے والی شدت پسند تنظیم بھی شامل ہے کا کنٹرول ہے اور وہ ماضی میں کئی صحافیوں کو اغوا اور ہلاک کر چکے ہیں۔

تاہم ابھی تک یہ واضح نہیں ہو سکا ہے کہ ان تینوں صحافیوں کو کس نے اغوا کیا تھا۔

ہسپانوی حکومت کا ایک بیان میں کہنا ہے کہ تینوں صحافی محفوظ اور خیریت سے ہیں اور اس وقت ترکی میں موجود ہیں جہاں سے انھیں سپین لایا جائے گا۔

بیان کے مطابق اتحادیوں جن میں ترکی اور قطر شامل ہیں نے ان کی رہائی میں اہم کردار ادا کیا ہے۔

سپین کی فیڈریشن آف جرنلسٹ کی صدر ایلزا گانزیلیز کا کہنا ہے کہ ’یہ خبر جذباتی اور باعثِ خوشی ہے۔‘

خیال رہے کہ 2014 میں بھی دو ہسپانوں صحافیوں کو دولت اسلامیہ کی جانب سے اغوا کیے جانے کے چھ ماہ بعد رہا کر دیا گیا تھا۔

حالیہ ہفتوں میں شامی شہر حلب پر فضائی حملوں میں درجنوں افراد مارے جا چکے ہیں۔

جس کے بعد بدھ کے روز سے شروع ہونے والی عارضی جنگ بندی کے اعلان سے شہر میں کچھ حد تک امن ہوا ہے۔

اسی بارے میں