’خودمختاری کو خطرہ تو جوہری ہتھیار استعمال کریں گے‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ’ان کا ملک ایمان داری سے جوہری عدم پھیلاؤ کی ذمہ داری کو پورا کرے گا‘

شمالی کوریا کے ذرائع ابلاغ کے مطابق ملک کے رہنما کم جونگ اُن نے کہاہے کہ ان کا ملک اس وقت تک جوہری ہتھیار استعمال نہیں کرے گا جب تک ملکی سلامتی کو خطرہ لاحق نہیں ہو گا۔

شمالی کوریا میں تین دہائیوں بعد حکمراں جماعت کا اجلاس جاری ہے جس میں پارٹی کے قائد کم جونگ اُن نے کہا ہے کہ جنوبی کوریا سے اتفاق رائے اور اعتماد سازی کے لیے زیادہ بات چیت کی ضرورت ہے۔

1980 کے بعد پہلے اجلاس میں جماعت کے ہزاروں کارکن کم جونگ اُن کی حمایت کے اظہار کے لیے شرکت کر رہے ہیں۔

٭ شمالی کوریا میں دہائیوں بعد حکمراں جماعت کا اجلاس

٭ 36سال بعد کانگریس کے اجلاس کی اہمیت کیا

* شمالی کوریا کے میزائل تجربے پر اقوامِ متحدہ کو تشویش

ذرائع ابلاغ کے مطابق اجلاس میں کم جونگ اُن نے مزید کہا کہ’ان کا ملک ایمان داری سے جوہری عدم پھیلاؤ کی ذمہ داری کو پورا کرے گا اور دنیا سے جوہری ہتھیاروں کے خاتمے کی بھرپو کوشش کرے گا۔‘

’ایک ذمہ داری جوہری ریاست ہونے کے ناطے ہماری جمہوریہ اس وقت تک جوہری ہتھیار استعمال نہیں کرے گی جب تک جوہری ہتھیاروں سے لیس دشمن طاقتیں اس کی خودمختاری میں دخل اندازی نہیں کرتیں۔‘

کم جونگ اُن کے مطابق ان کی حکومت’عوامی جمہوریہ کی خودمختاری کا احترام کرنے والے ان ممالک سے تعلقات معمول پر لائے گی اور بہتر کرے گی جو ماضی میں اس کے دشمن رہے ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption 1980 کے بعد پہلے اجلاس میں جماعت کے ہزاروں کارکن کم جونگ اُن کی حمایت کے اظہار کے لیے شرکت کر رہے ہیں

شمالی کوریا میں موجود بی بی سی کے ایک نامہ نگار کے مطابق کم جونگ اُن نے اپنے خطاب میں ملے جلے پیغامات دیے ہیں جبکہ ملک کی جوہری تنصیبات پر ہونے والی سرگرمیوں کے مشاہدے سے لگتا ہے کہ ایک اور جوہری تجرے کی تیاریاں کی جا رہی ہیں۔

جنوری میں شمالی کوریا کی جانب سے چوتھے جوہری تجربے کے بعد اس پر عائد بین الاقوامی پابندیاں مزید سخت کر دی گئی تھیں۔

شمالی کوریا نے غیر ملکی صحافیوں کو چار دن تک جاری رہنے والی اس کانگریس کی کوریج کی اجازت دے رکھی ہے تاہم ان کی نقل و حمل محدود ہوگی اور انھیں شمالی کوریا کے عام باشندوں سے بات چیت کی اجازت نہیں ہوگی۔

کم جونگ اُن 2011 میں اپنے والد کی وفات کے بعد حکمران بنے۔ کم جونگ اِل کے دور میں کوئی اجلاس نہیں بلایا گیا۔

اس اجلاس میں نئی سنٹرل کمیٹی کا انتخاب کیا جائے گا جو اہم سیاسی عہدوں کا انتخاب کرے گی۔ خیال ہے کہ حالیہ حکمران کے وفاداروں کو اہم منصب دیے جائیں گے۔بعض ماہرین کا خیال ہے کہ کمِ کی بہن کم یو جونگ کو بھی ترقی دی جائے گی۔

اسی بارے میں