آسٹریا: کنسرٹ میں فائرنگ سے حملہ آور سمیت تین ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption حملہ آور بندوق نکالنے کے لیے پہلے اپنی کار کی طرف گيا اور پھر اسے نکالتے ہی وہاں پر جمع تقریبا 150 افراد کی بھیڑ پر اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی

آ‎سٹریا کے شہر نینزنگ میں پولیس حکام کا کہنا ہے کہ ایک مسلح شخص نے میوزک کنسرٹ میں اندھا دھند فائرنگ کی جس سے دو افراد ہلاک ہوئے ہیں اور خود حملہ آور نے بھی اپنے آپ کو گولی مار کر ہلاک کرلیا۔

یہ واقعہ مقامی وقت کے مطابق صبح تین بجے پیش آيا جس میں مزید 11 افراد زخمی ہوئے ہیں۔ بعض زخمیوں کی حالات نازک بتائی جا رہی ہے۔

اطلاعات کے مطابق 27 سالہ حملہ آور کی فائرنگ سے قبل ہی کار پارک کرنے کی جگہ پر اس کی ایک خاتون کے ساتھ بحث و تکرار ہوئي تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اطلاعات کے مطابق 27 سالہ حملہ آور کی فائرنگ سے قبل ہی کار پارک کرنے کی جگہ پر اس کی ایک خاتون کے ساتھ بحث و تکرار ہوئي تھی

خبروں کے مطابق حملہ آور بندوق نکالنے کے لیے پہلے اپنی کار کی طرف گيا اور پھر اسے نکالتے ہی وہاں پر جمع تقریباً 150 افراد کی بھیڑ پر اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی۔

پھر وہ شخص کار پارک کرنے کی جگہ واپس آیا اور اپنے آپ کو بھی گولی مار لی۔ سرکاری ٹی وی چینل او آر ایف کے مطابق بظاہر ایسا لگ رہا ہے کہ وہ بندوق اصل میں ایک رائفل تھی۔

یہ میوزک کنسرٹ ایک موٹر سائیکل کلب نے منعقد کیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption جب یہ واقعہ پیش آيا تو اس وقت وہاں پر لائٹیں بہت کم جل رہی تھیں اور لائٹ مدھم تھی

شہر کی میئر فلوریناکیزرولر کا کہنا ہے کہ موسیقی کا یہ پروگرام گذشتہ دس برسوں سے یونہی بغیر کسی مسئلے کے آرام سے ہوتا رہا تھا جس میں پہلے کبھی کوئي خلل نہیں پڑا۔

جب یہ واقعہ پیش آيا تو اس وقت وہاں پر لائٹیں بہت کم جل رہی تھیں اور روشنی مدھم تھی۔

میئر کا کہنا تھا کہ کنسرٹ میں آنے والے لوگ فائرنگ سے ڈر کر ادھر ادھر بھاگنے لگے اور بہت سے لوگ جان بچانے کے لیے آس پاس کی جھاڑیوں میں جا چھپے۔

اسی بارے میں