برطانیہ آنے والے مہاجرین کی تعداد تین لاکھ 33 ہزار

Image caption یورپی اور دیگر ممالک سے برطانیہ آنے والے مہاجرین کی تعداد بڑھتی جا رہی ہے

قومی اعداد و شمار سے متعلق محکمے کا کہنا ہے کہ 2015 میں برطانیہ میں آنے والے تارکین وطن کی کل تعداد تین لاکھ 33 ہزار تک پہنچ گئی ہے۔

محکمے کے اعداد و شمار کے مطابق یورپی ممالک سے برطانیہ آنے والے لوگوں کی تعداد ایک لاکھ 84 ہزار ہے۔

یو کے انڈیپینڈنٹ پارٹی کے نائجل فراج کا کہنا ہے کہ ان اعداد و شمار سے ظاہر ہوتا ہے کہ امیگریشن قابو سے باہر ہے اور اگر ہم یورپی یونین میں رہے تو حالات مزید خراب ہو جائیں گے۔

جبکہ لندن کے سابق میئر بورس جانسن کا کہنا ہے کہ یورپی یونین کے ساتھ رہنے کے حق میں ووٹ دینے کا مطلب ہے کہ اس مسئلے کو کبھی بھی قابو نہیں کیا جا سکے گا۔

لیکن دوسری طرف وزیر داخلہ جیمز بروکن شائر کہتے ہیں کہ یورپی یونین میں برطانیہ کی رکنیت پر وزیراعظم نے جو تبادلہ خیال کیا ہے اس سے غیر قانونی تارکین وطن کی آمد کے دروازے بند ہو جائیں گے، اور یہ کہ یورپی یونین کو چھوڑنا مسئلے کا حل نہیں ہے۔

ایک تازہ ترین سروے کے مطابق یورپی یونین کے تقریباً 20 لاکھ شہری اس وقت برطانیہ میں کام کر رہے ہیں۔

گذشتہ سال برطانیہ میں تین لاکھ 18 ہزار اضافی مہاجرین آئے، جو ہر سال ہجرت کرنے والوں کی تعداد کا 50 فیصد ہے۔ ان مہاجرین کا تعلق یورپی یونین اوراس کے باہر کے ملکوں سے ہے۔

اسی بارے میں