یورپ میں بارشیں، فرانس کےبعض علاقے آفت زدہ قرار

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption سیلاب کا پانی اپنے ساتھ کاروں اور درختوں کو بھی بہا کر لے گیا

فرانس کے صدر فرانسوا اولاند نے اعلان کیا ہے کہ شدید بارشوں سے متاثرہ علاقوں کو آفت زدہ قرار دیا جائے گا۔

کسی علاقے کو آفت زدہ قرار دینے سے فنڈ کی فراہمی آسان ہو جاتی ہے۔

مرکزی فرانس کے قصبوں کو کئی عشروں میں شدید ترین بارشوں کا سامنا ہے۔

پیرس سےگذرنے والے دریائے سین کی سطح میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اور شہر کی زیر زمین میٹرو کو بند کر دیا گیا ہے۔

پورے یورپ میں شدید بارشوں کی وجہ سے دس افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

یورپ میں مزید بارشوں کی پیشنگوئی کی گئی ہے۔

جنوبی جرمنی میں چار افراد کے ڈوبنے کی خبر ہے جبکہ دو لاپتہ ہیں اس کے علاوہ ہزاروں گھروں میں بجلی نہیں ہے۔

وسطی فرانس کے کچھ علاقے بدترین سیلاب سے متاثر ہوئے ہیں۔سیلاب سے متاثرہ ایک گھر سے ایک عمر رسیدہ خاتون کی لاش برآمد ہوئی ہے۔

فرانس میں ہزاروں لوگوں کو سیلاب سے نکالا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ہوا کا دباؤ کم ہونے کے سبب یورپ کے زیادہ تر علاقوں میں شدید باریشں ہو رہی ہیں

محکمہ موسمیات نے پورے وسطی یورپ میں وسطی فرانس سے یوکرین تک شدید بارشوں کی پیشنگوئی کی ہے۔

وسطی فرانس میں ایک دن کے وقفے کے بعد پھر دریاؤں کا پانی خطرے کے نشان سے کہیں اوپر بہہ رہا ہے۔

محکمہ موسمیات کے مطابق ہوا کا دباؤ کم ہونے کے سبب یورپ کے زیادہ تر علاقوں میں شدید بارشیں ہو رہی ہیں اور اگلے چند دنوں میں موسم میں تبدیلی کا کوئی امکان نظر نہیں آ رہا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ہزاروں افراد کو سیلاب سے متاثرہ علاقوں سے نکالا گیا

فرانس سے بیلجئیم، جرمنی سے جنوبی پولینڈ، رومانیہ، مالدووا اور یوکرین تک اس آواخرِ ہفتہ شدید بارشوں کی پیشنگوئی کی گئی ہے۔

جنوبی جرمنی کے ایک گھر کے تہہ خانے میں تین عورتیں ڈوب کر ہلاک ہو گئیں۔

سیلاب کا پانی کاروں، درختوں یہاں تک کے گھروں کے فرنیچر کو بہا کر لے گیا۔

آسٹریا کی سرحد پر تمام سڑکیں اور سکول بند ہیں۔

اسی بارے میں