پیرس:’دریائے سین کی سطح معمول سے چھ میٹر بڑھنے کا خدشہ‘

Image caption مرکزی فرانس کے قصبوں کو کئی عشروں میں شدید ترین بارشوں کا سامنا ہے جہاں سیلاب کی وجہ سے ہزاروں افراد کے گھروں میں بجلی نہیں ہے

فرانس میں حکام نے خبردار کیا ہے کہ دارالحکومت پیرس میں سیلاب کی صورت حال جمعے کو مزید بگڑ سکتی ہے اور شہر کے معروف دریائے سین میں پانی کی سطح معمول سے 19 فٹ تک زیادہ ہو سکتی ہے۔

حکام نے اس صورت حال کے پیش نظر ہی لوور اور اورزے عجائب گھر بند کر دیے ہیں تاکہ وہاں کا عملہ بیش قیمت اور نایاب فن پاروں کو محفوظ مقام پر منتقل کر سکے۔

٭ فرانس اور جرمنی میں شدید بارشوں سے تباہی: تصاویر

جرمنی اور فرانس میں حالیہ بارشوں کے نتیجے میں آنے والے سیلاب میں اب تک 11 افراد ہلاک ہوچکے ہیں جبکہ ہزاروں افراد بےگھر ہو ئے ہیں۔

محکمۂ موسمیات کا کہنا ہے کہ اختتامِ ہفتہ پر یورپ میں فرانس سے یوکرین تک کے علاقے میں مزید بارشیں متوقع ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ہزاروں لوگوں کو متاثرہ علاقے سے بچا کر محفوظ مقام پر پہنچایا گيا ہے

یہ بھی کہا گیا ہے کہ کچھ علاقوں میں چند گھنٹوں کے دوران 50 ملی میٹر یا دو انچ تک بارش ہو سکتی ہے۔

فرانس کے صدر فرانسوا اولاند نے اعلان کیا ہے کہ شدید بارشوں سے متاثرہ علاقوں کو آفت زدہ قرار دیا جائے گا۔ کسی علاقے کو آفت زدہ قرار دینے سے فنڈ کی فراہمی آسان ہو جاتی ہے۔

مرکزی فرانس کے قصبوں کو کئی عشروں میں شدید ترین بارشوں کا سامنا ہے جہاں سیلاب کی وجہ سے ہزاروں افراد کے گھروں میں بجلی نہیں ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP

اطلاعات کے مطابق پیرس سےگزرنے والے دریائے سین کی سطح میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اور شہر کی زیر زمین میٹرو کو بھی بند کر دیا گیا ہے۔

وسطی فرانس کے کچھ علاقے بدترین سیلاب سے متاثر ہوئے ہیں جہاں ہزاروں افرادہ کو متاثرہ علاقوں سے نکالا گیا ہے۔

وسطی فرانس میں ایک دن کے وقفے کے بعد پھر سے دریاؤں کا پانی خطرے کے نشان سے اوپر بہہ رہا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

اس کے علاوہ جنوبی جرمنی میں چار افراد کے ڈوبنے کی خبر ہے جبکہ دو لاپتہ ہیں اس کے علاوہ ہزاروں گھروں میں بجلی نہیں ہے۔

محکمہ موسمیات کے مطابق ہوا کا دباؤ کم ہونے کے سبب یورپ کے زیادہ تر علاقوں میں شدید بارشیں ہو رہی ہیں اور اگلے چند دنوں میں موسم میں تبدیلی کا کوئی امکان نظر نہیں ہے۔

فرانس سے بیلجئیم، جرمنی سے جنوبی پولینڈ، رومانیہ، مالدووا اور یوکرین تک اس آواخرِ ہفتہ شدید بارشوں کی پیشنگوئی کی گئی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ہزاروں افراد کو سیلاب سے متاثرہ علاقوں سے نکالا گیا

اسی بارے میں