پیرس میں ’غیرمعمولی‘ سیلاب، میٹرو، عجائب گھر بند

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

فرانس کے شہر پیرس میں بہنے والے دریائے سین میں 30 سال کا سب سے اونچے درجے کا سیلاب ہے، جس کی وجہ سے زیرِ زمین ریلوے نظام اور عجائب گھر بند کر دیے گئے ہیں۔

سین میں سیلاب ساڑھے چھ میٹر کی حد تک پہنچ سکتا ہے جس میں اختتام ہفتہ کمی آنے کی توقع نہیں ہے کیوں کہ اس دوران مزید بارشوں کی پیش گوئی کی گئی ہے۔

پیرس کے مشہورِ زمانہ لوور میوزیم کو بند کر دیا گیا ہے اور عملے نے فن پاروں کو محفوظ مقامات پر منتقل کر دیا ہے۔ یاد رہے کہ لیونارڈو ڈاونچی کی شہرۂ آفاق پینٹنگ مونا لیزا اسی میوزیم میں ہے۔

وسطی یورپ میں شدید بارشوں کے باعث کم از کم 15 افراد ہلاک ہو چکے ہیں اور فرانس سے لے کر یوکرین تک میں سیلاب آئے ہیں۔

فرانس میں دو افراد ہلاک ہوئے ہیں جب کہ جنوبی جرمنی میں بارشوں نے دس لوگوں کی جان لی ہے، اور کئی قصبے تباہ ہو گئے ہیں۔

دسیوں ہزار لوگوں کو گھربار چھوڑ کر پناہ گاہوں کا رخ کرنا پڑا ہے۔

لوور میوزیم میں عملے نے سیلاب کے پیشِ نظر ڈھائی لاکھ سے زائد فن پاروں کو تہہ خانوں سے نکال کر اونچے مقامات پر منتقل کر دیا ہے۔

فرانس کے صدر فرانسوا اولاند نے سیلاب کو ’غیرمعمولی‘ قرار دیا ہے۔

اسی بارے میں