حلب میں کشیدگی، ’حکومتی جنگی طیاروں کی بمباری‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption گذشتہ کئی برسوں سے حلب شہر باغیوں اور حکومت کے درمیان تقسیم ہو کر رہ گیا ہے

شام میں سرگرم افراد کا کہنا ہے کہ روس کے تعاون سے حکومتی افواج کے جنگی جہازوں نے حلب کے اردگرد شدید بمباری کی ہے۔

سیئرین آوبزرویٹری فار ہیومن رائٹس کا کہنا ہے کہ حکومتی افواج نے باغیوں کے زیر قبضہ علاقوں میں بمباری کی اور ہیلی کاپٹروں سے بیرل بم پھینکے۔

٭ حلب کی صورتحال ’تباہ کن‘ ہو چکی ہے: اقوام متحدہ

امداری کارکنوں کا کہنا ہے کہ مختلف علاقوں میں عمارتوں کے ملبے سے کم سے کم 20 لاشیں نکالی گئی ہیں۔

دوسری جانب شام کے سرکاری ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ باغیوں نے حکومت کے زیرِ کنٹرول علاقوں میں میزائل گرائے ہیں۔

سرکاری میڈیا کے مطابق ان حملوں میں متعدد افراد ہلاک ہوئے ہیں اور کئی زخمی ہوئے ہیں۔

حکومت کا کہنا ہے کہ سنیچر کو باغیوں کی جانب سے اسی نوعیت کے ایک حملے میں کم سے کم 24 افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

گذشتہ کئی برسوں سے حلب شہر باغیوں اور حکومت کے درمیان تقسیم ہو کر رہ گیا ہے۔

فروری میں ہونے والے جنگ بندی کے معاہدے کے باوجود شمالی شہر میں شدید بمباری ہو رہی ہے۔

اسی بارے میں