ڈونلڈ ٹرمپ کی مہم کے مینیجر مستعفی ہو گئے

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

امریکہ کی رپبلکن جماعت کی جانب سے ممکنہ صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کی انتخابی مہم چلانے والے کوری لیونڈوسکی نے استعفیٰ دے دیا ہے۔

ٹرمپ کی مہم کی ترجمان کا کہنا ہے کہ کوری اب ٹرمپ کی مہم کے ساتھ کام نہیں کر رہے اور ٹرمپ کی پوری ٹیم ان کی محنت کے لیے شکر گزار ہے۔

کوری کا مستعفی ہونے کی وجہ معلوم نہیں ہو سکی ہے۔

امریکی اخبار نیو یارک ٹائمز کا کہنا ہے کہ ٹرمپ کی ٹیم صدارتی انتخابات کے حوالے سے مہم میں تبدیلیاں لا رہی ہے۔

کوری نے ایسے وقت استعفیٰ دیا ہے جب ٹرمپ کی سخت زبان اور سخت گیر امیگریشن پالیسی کے حوالے سے ٹرمپ کو رپبلکن جماعت کے سینیئر رہنماؤں کی سخت مخالفت کا سامنا ہے۔

اورلینڈو کے نائٹ کلب پر ہونے والے حملے کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ کے ردعمل پر سخت تنقید کی گئی ہے۔

اس حملے میں 49 افراد ہلاک ہوئے تھے۔ اس حملے کے بعد ٹرمپ نے ایک بار پھر اپنے اس موقف کا اعادہ کیا کہ امریکہ میں مسلمانوں کا داخلہ بند کردیا جانا چاہیے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty

رپبلکن جماعت نے ٹرمپ سے اس وقت دوری اختیار کی جب انھوں نے ایک ہسپانوی جج پر تنقید کی جو ٹرمپ کے خلاف ہونے والے دو مقدمات کی سماعت کر رہے ہیں۔

کوری لیونڈوسکی کے پریس کے ساتھ تعلقات اچھے نہیں رہے۔ اس سال کے شروع میں ان پر ایک جلسے کے بعد ٹرمپ کے راستے سے ایک خاتون صحافی کو دھکا دے کر ہٹانے کی فرد جرم عائد ہوا تھی۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے اس واقعے پر کوری کا بھرپور دفاع کیا اور آخر میں ان کے خلاف مقدمہ ختم کر دیا گیا۔

ڈونلڈ ٹرمپ کی مہم کے ایک ڈائریکٹر مائیکل کپوٹو نے کوری کے مستعفی ہونے کی خبر کے بعد ٹوئٹ کیا ’ڈنگ ڈونگ جادو گرنی مر گئی‘۔

ذرائع نے نیو یارک ٹائمز کو بتایا کہ کوری اور ٹرمپ کے چیف سٹیریٹیجسٹ پال منافورٹ کے درمیان اختلافات تھے اور کوری پال کے اقدامات کو روکنے کے لیے مزید سٹاف بھرتی کرتے تھے۔

واضح رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کی شہرت میں کمی واقع ہو رہی ہے اور ووٹروں کی اکثریت ان کے حق میں نہیں ہیں۔

اسی بارے میں