سیاہ فام کی ہلاکت کے خلاف لوزيانا میں احتجاج

تصویر کے کاپی رائٹ AP

امریکی ریاست لوزيانا میں دو سفید پولیس افسران کی جانب سے ایک سیاہ فام شخص کو مارنے کی ویڈیو سامنے آنے کے بعد احتجاج ہوا ہے۔

سیاہ فام شخص کی ہلاکت کا یہ واقعہ منگل کو ریاست لوزیانا کے دارالحکومت بیٹن روگ میں پیش آیا۔

٭ سیاہ فام ہی کیوں پولیس کے نشانے پر؟

٭ امریکہ میں پولیس کی فائرنگ سے سیاہ فام شہری ہلاک

٭ فرگوسن میں گولی چلانے والے مجرم ہیں: براک اوباما

پوسٹ مارٹم کی رپورٹ کے مطابق 37 سالہ ایلٹن سٹرلنگ نامی شخص کی موت سینے اور کمر پر آنے والے زخموں کی وجہ سے ہوئی۔

اس واقع کے خلاف مظاہرین نے قریبی سٹرکوں کو بند کر دیا جس کے بعد پولیس نے مظاہرین جن کی تعداد 200 کے قریب تھی کو وہاں سے ہٹا دیا تاہم منتظمین کا کہنا ہے کہ وہ بعد میں سٹی ہال کے سامنے اکھٹا ہوں گے۔

خیال رہے کہ یہ واقعہ امریکہ میں افریقی امریکیوں کی پولیس کی جانب سے ہونے والی ہلاکتوں کے بعد بڑھتی ہوئے تناؤ کے بعد سامنے آیا ہے۔

امریکہ میں پولیس کی جانب سے ایک اندازے کے مطابق ہر سال 1,000 افراد ہلاک ہو جاتے ہیں جن میں زیادہ تر سیاہ فام امریکی ہوتے ہیں۔

پولیس کے ترجمان کا کہنا ہے کہ اس اطلاع کے بعد کہ ایک شخص سٹور سے باہر سی ڈیز بیچ رہا ہے اور اس نے کسی کو بندوق سے دھمکایا ہے جس کے بعد پولیس کو طلب کر لیا گیا۔

ترجمان کے مطابق اس واقعہ میں ملوث دو پولیس افسران کو انتظامی رخصت پر بھیج دیا گیا ہے جو کہ مروجہ طریقۂ کار ہے۔

اسی بارے میں