مائیکا جانسن نے اکیلے حملہ کیا

تصویر کے کاپی رائٹ Facebook
Image caption ملزم مائیکا جانسن نے امریکی ریزرو فوج میں کام کرتے ہوئے افغانستان میں بھی خدمات سرانجام دیں

حکام کا کہنا ہے کہ امریکی ریاست ٹیکسس کے شہر ڈیلس میں ایک احتجاجی جلوس کے دوران پانچ پولیس اہلکاروں کو قتل کرنے کے ملزم مائیکا جانسن کا کوئی ساتھی نہیں تھا۔

میئر مائیک رولنگ نے کہا: ’ہمارا خیال ہے کہ شہر اب محفوظ ہے۔‘

جانسن کے گھر سے بم بنانے کا مواد، رائفلیں اور جنگی رسائل برآمد ہوئے تھے۔ وہ خود اس حملے کے دوران مارے گئے تھے۔

٭ ڈیلس میں احتجاجی جلوس میں فائرنگ

ڈیلس میں ہونے والے جلوس کا مقصد پولیس کے ہاتھوں سیاہ فام افراد کی ہلاکت پر احتجاج کرنا تھا۔ جمعے کو امریکہ بھر میں اسی قسم کے ہزاروں جلوس نکالے گئے تھے۔

اس سے قبل ریاست منی سوٹا میں فلینڈو کیسٹیل اور لوئی زیانا میں ایلٹن سٹرلنگ کو پولیس نے گولی مار کر ہلاک کر دیا تھا۔

ڈیلس پولیس کے سربراہ ڈیوڈ براؤن اور ہوم لینڈ سکیورٹی کے سیکریٹری جے جانسن نے بھی کہا تھا کہ بظاہر حملہ آور تنہا تھا۔

تاہم ٹیکسس کے گورنر گریگ ایبٹ کے مطابق پولیس ’ہر ممکنہ پہلو پر غور کر کے اس بات کو یقینی بنا رہی ہے کہ ہر ممکنہ مشتبہ فرد یا دوسرے شرکائے کار سے لاحق خطرے کو ختم کیا جا سکے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption مائیکا جانسن خود بھی اس حملے کے دوران مارے گئے

حکام نے جمعے کو کہا تھا کہ کم از ایک اور نشانچی بھی حملے میں شامل تھا۔

فائرنگ کے واقعے کے بعد تین افراد کو گرفتار کیا تھا تاہم ان کے بارے میں مزید تفصیلات نہیں بتائی گئیں۔

منی سوٹا اور لوئی زیانا میں پولیس کے ہاتھوں ہونے والی ہلاکتوں کے بعد امریکہ کے کئی دوسرے شہروں میں بھی فائرنگ کے واقعات ہوئے ہیں۔

ہیوسٹن، نیو اورلینز اور سان فرانسسکو میں پولیس کے خلاف مظاہرے ہوئے جن میں لوگ نعرے لگا رہے تھے: ’جب تک پولیس نسل پرست ہو گی، تب تک نہ انصاف و امن نہیں ہو گا۔‘

انسانی حقوق کی تنظیم ’بلیک لائیوز میٹر‘ کے رہنماؤں نے ڈیلس میں ہونے والے واقعے کی مذمت کی ہے، تاہم کہا کہ ریاست پینسلوینیا کے شہر فلیڈیلفیا میں ہونے والا احتجاجی مظاہرہ منصوبے کے مطابق منعقد کیا جائے گا۔

جمعے کو اس تنظیم نے لندن میں بھی جلوس نکالا تھا۔

ڈیلس کے میئر رولنگ نے پولیس اہلکاروں کی ماتمی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے امریکیوں پر زور دیا کہ وہ ملک کے نسلی زخموں کو مندمل کرنے کے لیے اٹھ کھڑے ہوں۔

اسی بارے میں