ون ایم بی ڈی کیس: تین نادر فن پارے ضبط

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سوئس حکام نے یہ نہیں بتایا کہ انھوں نے ن فن پاروں کو کس جگہ پر چھاپہ مار کر اپنے قبضے میں لیا ہے

سوئس پولیس نے ملائیشیا کےایک بڑے مالیاتی سکینڈل کی تحقیقات کے دوران تین فن پارے اپنے قبضے میں لے لیے ہیں۔

٭ ملائیشیا: نجیب رزاق بدعنوانی کے الزامات سے بری

بدھ کو امریکی حکام نے ایک مقدمہ درج کروایا تھا جس میں کہا گیا تھا کہ ایک ارب ڈالر کے ان اثاثوں کو ضبط کیا جائے جن کے بارے میں یہ خیال کیا جا رہا ہے کہ وہ ملائشیا کے سٹیٹ ’فنڈ ون ایم بی ڈی‘ کی رقم سے بنائے گئے ہیں۔

امریکہ کا کہنا ہے کہ اس میں سے کچھ رقم فنڈ سے متعلقہ لوگوں نے پرتعیش گھروں، ہوٹلوں اور فائن آرٹس پر خرچ کی ہے۔

یہ فنڈ ملائیشیا کے وزیراعظم نجیب رزاق نے سنہ 2009 میں بنایا تھا اور یہ ان کے زیرِ انتظام تھا۔ تاہم وہ اس میں کسی بھی قسم کی خرد برد سے انکاری ہیں۔

سوئٹزرلینڈ کے وفاقی ادارہ برائے انصاف نے کہا ہے کہ ان فن پاروں کو امریکی حکام کی درخواست پر ضبط کیا گیا ہے۔

یہ فن پارے ونسینٹ وین گو، کلاڈ مونیٹ اور ینٹی جارجز میجیور کے بنائے ہوئے ہیں۔

سوئس حکام نے یہ نہیں بتایا کہ انھوں نے ان فن پاروں کو کس جگہ پر چھاپہ مار کر اپنے قبضے میں لیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ ابھی ان کی کارروائیاں جاری ہیں۔

اسی بارے میں