’ حملہ آور کی دماغی حالت تحقیقات کا مرکزی پہلو‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption گرفتار کیے جانے والے 19 سالہ شخص کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی

وسطی لندن میں چاقو کے حملے میں ایک خاتون ہلاک اور کم سے کم پانچ افراد زخمی ہو گئے ہیں جبکہ حملہ کرنے والے 19 سالہ شخص کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

میٹروپولیٹن پولیس کا کہنا ہے کہ چاقو سے حملے کی تحقیقات میں مرکزی پہلو (حملہ آور کی) دماغی حالت ہے جبکہ لندن کے میئر صادق خان نے عوام کو ’پرامن اور محتاط‘ رہنے کا کہا ہے۔

میٹرو پولیٹن پولیس کے مطابق تاہم اس پہلو کو بھی دیکھ سکتے ہیں کہ دہشت گردی بھی ایک محرک ہو سکتا ہے۔

میٹروپولیٹن پولیس کے خصوصی آپریشنز کے اسسٹنٹ کمشنر مارک رولی کا کہنا ہے کہ قتل کی تحقیقات کرنے والا پولیس یونٹ اس واقعے کو دیکھ رہا ہے اور انھیں انسداد دہشت گردی یونٹ کی بھی معاونت حاصل ہے۔

سکارٹ لینڈ یارڈ نے دو خواتین اور تین مردوں کے زخمی ہونے کی تصدیق کی ہے۔

گرفتار کیے جانے والے 19 سالہ شخص کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی اور اسے ہسپتال میں پولیس کی زیرنگرانی رکھا گیا ہے۔

یہ واقعہ رسل سکوئر کے علاقے میں پیش آیا ہے۔

Image caption سکارٹ لینڈ یارڈ نے دو خواتین اور تین مردوں کے زخمی ہونے کی تصدیق کی ہے

پولیس کو برطانوی وقت کے مطابق شب 10:33 پر اطلاع ملی تھی کہ ایک شخص کے پاس چاقو ہے اور وہ لوگوں کو زخمی کر رہا ہے۔

حملہ آور کو بھی اگلے پانچ منٹ میں ٹیزر گن کی مدد سے گرا کر گرفتار کر لیا گیا تھا۔

پولیس نے جائے وقوعہ سے قریب ایک فورینسک کیمپ قائم کر لیا ہے۔

بی بی سی کے نامہ نگار اینڈی مور کے مطابق علاقے میں پولیس کی بھاری نفری موجود ہے۔

فی الحال زخمیوں کے زخموں کی نوعیت کا علم نہیں ہو سکا۔

اسی بارے میں