بیلجیئم: ’پولیس پر حملہ کرنے والا الجیریا کا شہری تھا‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پولیس کی جانب سے جوابی فائرنگ میں حملہ آور مارا گیا تھا

بیلجیئم کے حکام کا کہنا ہے سنیچر کو چھرے سے حملہ کر کے دو خاتون پولیس اہلکاروں کو زخمی کرنے والا شخص الجزائر کا شہری تھا اور اس نے دہشت گردوں سے متاثر ہو کر یہ قدم اٹھایا تھا۔

حکام کے بقول اس سلسلے میں مزید تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

خیال رہے کہ بیلجیئم کے شہر شارلروآ میں سنیچر کو مقامی پولیس سٹیشن کے باہر ایک شخص نے پولیس اہلکاروں پر چھرے سے حملہ کیا تھا اور حملے کے وقت اس نے ’اللہ اکبر‘ کا نعرہ لگایا تھا۔

پولیس کی جانب سے جوابی فائرنگ میں حملہ آور مارا گیا تھا۔

ادھر اتوار کو دولتِ اسلامیہ کہلانے والی شدت پسند تنظیم نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ حملہ اس کے ’سپاہی‘ نے کیا ہے۔

بیلجیئم کے سرکاری ذرائع کے مطابق مبینہ حملہ آور سنہ 2012 سے ملک میں مقیم تھا۔

بیلجیئم کے وزیراعظم نے شارلروآ میں مسلح شخص کے پولیس پر حملے کو دہشت گردی کا واقعہ قرار دیتے ہوئے عوام سے چوکس رہنے کی اپیل کی تھی۔

خیال رہے کہ گذشتہ ماہ جولائی کی 30 تاریخ کو بیلجیئم میں انسداد دہشت گردی کے ایک آپریشن میں دو بھائیوں کو ملک میں حملوں کی منصوبہ بندی کرنے پرگرفتار کیا گیا تھا۔

بیلجیئم مارچ میں ہونے والے حملوں کے بعد ابھی بھی ہائی الرٹ پر ہے۔

مارچ میں ایئرپورٹ اور میٹرو سٹیشن پر ہونے والے حملے میں کم از کم 32 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

خود کو دولتِ اسلامیہ کہلانے والی شدت پسند تنظیم نے اس حملے کی ذمہ داری بھی قبول کی تھی۔

اسی بارے میں