جڑے دھڑ والی بچیوں نے سکول جانا شروع کر دیا

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption روزی (بائیں) اور روبی سکول جانے کا سوچ کر بہت خوش ہیں

ان دو جڑواں بچیوں نے سکول جانا شروع کر دیا ہے جن کے دھڑ پیدائش کے وقت آپس میں جڑے ہوئے تھے اور ڈاکٹروں نے جن کے بچنے کا صرف 20 فیصد امکان ظاہر کیا تھا۔

لندن کے جنوب مشرقی علاقے میں پیدا ہونے والی روزی اور روبی فورموسا کے پیٹ آپس میں جڑے ہوئے تھے اور ان کی آنتوں کے بعض حصے بھی مشترک تھے۔ یہ بچیاں 2012 میں ایک ہنگامی آپریشن کے بعد الگ کر دی گئی تھیں۔

ان کی ماں اینجلا فورموسا نے کہا کہ ان کی چار سالہ بچیاں سکول جانے کے لیے ’بہت پرجوش‘ ہیں۔

٭ جڑواں بچیاں جو مختلف ملکوں میں پیدا ہوئیں

٭ جڑواں بچے مگر والد مختلف

انھوں نے کہا: ’چار سال پہلے میرے وہم و گمان میں بھی نہیں تھا کہ کبھی ایسا ممکن ہو سکے گا۔ جب میں امید سے تھی تو مجھے نہیں لگتا تھا کہ میں ان کا سکول میں پہلا دن دیکھ پاؤں گی، اس لیے یہ بات بہت زبردست ہے اور اس کے لیے گوش (ہسپتال) کا شکریہ۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption پیدائش کے وقت بچیوں کے دھڑ آپس میں جڑے ہوئے تھے

مسز فورموسا نے کہا کہ جب انھیں پتہ چلا کہ ان کی بچیوں کے دھڑ جڑے ہوئے ہیں تو یہ بات ان کے لیے اور ان کے خاوند کے لیے تباہ کن تھی۔

یہ بچیاں پیدائش کے مقررہ وقت سے چار ہفتے قبل یونیورسٹی کالج آف لندن کے ہسپتال میں آپریشن کے ذریعے پیدا ہوئیں۔

پیدائش کے دو گھنٹوں کے اندر اندر انھیں گریٹ اورمونڈ سٹریٹ ہسپتال (گوش) لے جایا گیا جہاں ان کی ہنگامی سرجری کی گئی کیوں کہ ان کی آنتیں بند تھیں۔

35 سالہ مسز فورموسا نے کہا کہ انھیں ایسا لگا جیسے بچیوں کے آپریشن کے دوران ’لاکھوں برس‘ بیت گئے ہوں۔

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption بچیوں کی پہلی سالگرہ

تاہم بچیوں کے کامیاب آپریشن کے بعد سے ’وقت کو جیسے پر لگ گئے، مجھے یقین نہیں آ رہا کہ وقت اتنی جلدی کیسے گزر گیا۔

سرگرم اور پرعزم بچیاں

’وہ سکول جانے کے معاملے پر بہت پرجوش ہیں۔ ان کی بڑی بہن اسی سکول میں پڑھتی ہے اور وہ شدت سے سکول کے پہلے دن کا انتظار کر رہی ہیں۔ ان کی اپنی استانی سے ملاقات ہوئی ہے اور وہ انھیں بہت پسند کرنے لگی ہیں۔ انھیں پینٹنگ کرنا اور پڑھنا بہت اچھا لگتا ہے۔

’وہ ایک دوسرے سے بہت ملتی جلتی ہیں، وہ بہت سرگرم اور پرعزم بچیاں ہیں۔ مجھے اس کا اندازہ اسی وقت سے ہو گیا تھا جب وہ میری کوکھ میں تھیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ PA
Image caption چار سالہ بچیاں ستمبر میں سکول جانا شروع کر دیں گی لیکن انھوں سے سکول کی یونیفارم پہننے کی مشق ابھی سے شروع کر دی ہے

گوش کے ماہرِ امراضِ بچگان ڈاکٹر پاؤلو ڈی کوپی کہتے ہیں کہ ’ہمیں بہت خوشی ہے کہ روزی اور روبی ستمبر میں سکول جانا شروع کر دیں گی۔

’مریض کی صحت یابی اور نئی منازل طے کرنے کی خبریں ہمارے لیے ہمیشہ سے حوصلہ افزا ہوا کرتی ہیں۔ اس سے ہمارا کام مزید اطمینان بخش ہو جاتا ہے۔‘

اسی بارے میں