روس کے گاؤں میں نلکوں سے پانی کے بجائے تیل نکلنے لگا

Image caption چیرسکی نامی گاؤں میں مرکزی ہیٹنگ نظام میں حادثہ پیش آیا تھا جس کے نتیجے میں تین ٹن سے زیادہ تیل پانی کی لائن میں لیک ہوگیا

مشرقی روس کے ایک گاؤں میں لوگ یہ دیکھ کر اس وقت حیرت میں پڑگئے کہ جب انھوں نے صبح گرم پانی کے لیے نلکا کھولا تو اس میں سے پانی کے بجائے تیل نکل رہا تھا۔

ایک مقامی ’یکوتیا میڈیا‘ نامی ویب سائٹ کا کہنا ہے کہ چیرسکی نامی گاؤں میں مرکزی ہیٹنگ نظام میں حادثہ پیش آیا تھا جس کے نتیجے میں تین ٹن سے زیادہ تیل پانی کی لائن میں لیک ہوگیا۔

یہ لیک ہونے والا تیل پاس کی ندی تک بھی پہنچا جس سے اس کا پانی اور مٹی آلودہ ہوگئی۔

ایک ویب سائٹ ’لائف نیوز پورٹل‘میں پوسٹ ہونے والے ایک ویڈیو میں گاؤں کے ایک شخص کو اپنے گھر کے نلکے سے بالٹی بھرتے د یکھا جا سکتا ہے۔ اس نلکے سے گاڑھا، کالا مادہ نکل رہا ہے جو بلا شببہ تیل ہے۔

چیرسکی گاؤں کے ایک باسی ایوون نے لائف نیوز کو بتایا کہ ’یہاں تک کہ لوگ کچھ دھو بھی نہیں سکتے کیونکہ نلکے سے تیل اور پانی کی آمیزش سے آلودہ نکلنے والی چیز کی بو پیٹرول کی طرح ہے۔ یہ پوری طرح گندہ ہے۔‘

حکام اب پانی کی سپلائی سے تیل کے تمام اثرات کو زائل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ ٹھنڈے پانی کی سپلائی میں تو کوئی خلل نہیں پڑا ہے اور پینے اور دھونے کے لیے اسی پانی کو ابال کر استعمال کریں۔

مقامی حکام اور ماحولیات کے تحفظ سے وابستہ افسران نے اس لیک کی باضابطہ انکوائری شروع کر دی ہے۔

چیرسکی میں بجلی کی سپلائی بھی ایک بڑا مسئلہ ہے اور یہ واقعہ ایک ایسے وقت پیش آيا جب گاؤں کے باسی ابھی 24 گھنٹے تک بجلی نہ ہونے کو جھیل چکے ہیں۔

بجلی نہ ہونے کے سبب مقامی حکام ہسپتالوں میں کام کاج اور دیگر ضروری چیزوں کے لیے جنریٹر سے کام لے رہے تھے۔

حکومت کے محکمہ توانائی کے اپنے ریکارڈز کے مطابق اس برس چيرسکی میں بجلی جانے کا یہ 23 واں واقعہ تھا۔

اسی بارے میں