ہٹلر کی فوج کے ٹوائلٹ پیپرز کی نیلامی

تصویر کے کاپی رائٹ Whytes Auction House
Image caption آئر لینڈ میں ایک شخص سے نجی طور پر یہ چیزیں 25 سال سے زائد کے عرصے میں اکٹھی کی ہیں

آئرلینڈ کے شہر ڈبلن میں ہٹلر کی فوج کو جنگِ عظیم دوم میں دیے گئے دو ٹوائلٹ پیپر رولز کی نیلامی کی جا رہی ہے۔

ان غیر استعمال شدہ ٹوائلٹ پیپرز کی قیمت 80 یسے 120 یورو کے درمیان ہے۔

17 ستمبر کو نیلامی کے لیے پیش کی جانے والی اشیا میں جرمنی کے فوجیوں کے ہیلمٹ، میدان جنگ میں خطرے سے آگاہ کرنے والے جھنڈے اور پولیس کا چاقو شامل ہیں۔

آئرلینڈ میں ایک شخص نے نجی طور پر یہ چیزیں 25 سال سے زائد کے عرصے میں اکٹھی کی ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Whytes auction house
Image caption جنگ عظیم اول کے وقت کے 30 جرمن ہیلمٹس ہیں جن میں سے کچھ نایاب ہیں

نیلامی کرنے والے ادارے کے سربراہ سٹیورٹ پرسیل کا کہنا تھا ’یہ بات کافی حیران کن ہے کہ یہ ٹوائلٹ پیپر اب بھی صحیح حالت میں ہیں۔ ‘

ان کا کہنا تھا ’ہم نے جنگ عظیم دوم کے دو ہیلمٹ مارچ میں 10000 یورو میں نیلام کیے تھے اور اس نیلامی میں ان اشیا کا مالک بھی شریک تھا۔‘

یہ چیزیں جمع کرنے والے شخص کی کوشش تھی کہ وہ جنگِ عظیم دوم کے ایک سپاہی کی کِٹ میں موجود چیزیں اکھٹی کرنا چاہتے تھے۔ جس میں اس کی بندوق صاف کرنے والے سامان سے لے کر ہر چیز شامل ہے۔

سٹیورٹ پرسیل کا کہنا تھا ’ یہ بات کافی دلچسپ ہے کہ سنہ 1945 میں کوئی شخص یہ کہے کہ ’چلو ہم یہ ٹوائلٹ پیپر ایک طرف رکھ دیتے ہیں کیونکہ مستقبل میں کسی شخص کو یہ بہت پرکشش چیز لگے گی۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Whytes auction house
Image caption نازی فوجیوں کے خبردار کرنے والے جھنڈے بھی نیلام کیے جائیں گے

پرسیل کا کہنا تھا کہ بعض لوگ شاید نازی فوج کی چیزوں کو جمع کرنا گناہ سمجھیں لیکن ان چیزوں کی ایک تاریخی اہمیت ہے۔

’جو لوگ یہ چیزیں جمع کرتے ہیں وہ سنجیدگی سے یہ کام کرنے والے ہیں جیسا کہ کچھ لوگ ٹکٹیں جمع کرتے ہیں۔

’اگر یہ لوگ یہ سب جمع نہیں کر رہے ہوتے تو آئندہ نسلوں کو دکھانے کے لیے ہمارے پاس کچھ نہیں ہوتا اور ہم کہتے کہ کسی نے انھیں جمع کرنے کی زحمت ہی نہیں کی۔‘

ان چیزوں کو جمع کرنے والے شخص کے پاس جنگ عظیم اول کے وقت کے 30 جرمن ہیلمٹس ہیں جن میں سے کچھ نایاب ہیں۔

اسی بارے میں