روسی جیٹ امریکی طیارے سے 10 فٹ کے فاصلے پر

تصویر کے کاپی رائٹ RIA Novosti

امریکی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ بحیرہِ اسود میں اس کے ایک جہاز کے دس فٹ کے فاصلے سے روسی جنگی جہاز ایس یو 27 گزرے ہیں۔

پینٹاگون نے ایس یو 27 کی جانب سے اتنے قریب سے گزرنے کو ’خطرناک اور غیر پیشہ وارانہ‘ قرار دیا ہے۔

دوسری جانب روسی وزارت دفاع نے کہا ہے کہ امریکی جاسوس جہاز روسی فضائی حدود کے قریب تھا اور روسی جیٹ طیارے ایس یو 27 کے پائلٹ نے بین الاقوامی قوانین کے تحت پرواز کی ہے۔

یاد رہے کہ روس بحیرہِ اسود میں جنگی مشقیں کر رہا ہے۔

پینٹاگون کے ترجمان کیپٹن جیف ڈیوس کا کہنا ہے کہ امریکی بحریہ کا جہاز پی 8 اے بین الاقوامی فضائی حدود میں عمومی پرواز پر تھا جب روسی جیٹ طیارے خطرناک حد تک قریب سے گزرے۔

’اس قسم کے اقدام ممکنہ طور پر غیر ضروری طور پر کشیدگی میں اضافہ کرتے ہیں اور کسی حادثے کا باعث بن سکتے ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters US Navy

امریکی وزارت دفاع کے ذرائع کے مطابق روسی جیٹ طیارہ امریکی جہاز کے 30 فٹ سے گزرا اور پھر دس فٹ کے فاصلے سے گزرا۔

روسی وزارت دفاع کا کہنا ہے کہ روسی جیٹ نے امریکی جہاز کو انٹرسیپٹ اس لیے کیا کہ وہ روسی فضائی حدود کی جانب بڑھ رہا تھا اور اس جہاز کی نشاندہی کرنے والا ٹرانسپونڈر بند تھا۔

روسی وزارت دفاع کی جانب سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ روسی جیٹ طیارے امریکی جاسوس طیارے کے قریب پہنچے اور اس کی نشاندہی کی جس کے بعد امریکی جاسوس طیارے نے تیزی سے اپنا رخ تبدیل کیا۔

’روسی طیارے نے بین الاقوامی قوانین کے مطابق پرواز کی۔‘

اسی بارے میں