ایران: برطانوی خاتون کو ’خفیہ الزامات‘ پر پانچ برس قید

تصویر کے کاپی رائٹ .
Image caption برطانوی وزارتِ خارجہ کا کہنا ہے کہ وہ نازنین کے خلاف عدالتی فیصلوں کی اطلاعات کے حوالے سے شدید فکر مند ہیں

ایران میں ایک ایرانی نژاد برطانوی شہری کو ’خفیہ الزامات‘ پر پانچ سال جیل میں ڈال دیا گیا ہے۔

ایرانی نژاد برطانوی خاتون کے شوہر کا کہنا ہے کہ ان کی بیوی نازنین زغاری ریٹ کلف کو اپریل میں اس وقت تہران ایئرپورٹ سے حراست میں لے لیا گیا تھا جب وہ ایران میں اپنے والدین سے ملنے کے لیے گئی تھی۔

نازنین زغاری کے شوہر کا کہنا ہے کہ ان کی بیوی نے انھیں جیل سے کال کی ہے اب انھیں بتایا کہ وہ اور زیادہ اس جیل کو برادشت نہیں کر سکتی۔انھوں نے بتایا کہ ان کی بیوی اپنی دو سالہ بیٹی گیبریئلہ کو بہت یاد کرتی ہیں۔

حکام نےدو سالہ گیبریئلہ کا پاسپورٹ بھی اپنے قبضے میں لے کر اسے نازنین کے والدین کے حوالے کر دیا ہے۔

نازنین زغاری ریٹ کلف تھام سن روئٹرز فاؤنڈیشن میں کام کرتی ہیں اور جب وہ چھٹیوں پر ایران گئیں تو انھیں تہران ہوائی اڈے پر حراست میں لے لیا گیا۔

برطانوی وزارتِ خارجہ کا کہنا ہے کہ وہ نازنین کے خلاف عدالتی فیصلوں کی اطلاعات کے حوالے سے شدید فکر مند ہیں اور وہ اپنے ایران ہم منصبوں کے سامنے یہ معاملہ بار بار اٹھاتے رہیں گے۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption نازنین زغاری ریٹ کلف تھام سن روئٹرز فاؤنڈیشن میں کام کرتی ہیں اور جب وہ چھٹیوں پر ایران گئیں تو انھیں تہران ہوائی اڈے پر حراست میں لے لیا گیا

شمالی لندن سے تعلق رکھنے والی نازنین کے شوہر کا کہنا ہے کہ ان کی بیوی نے انھیں جمعے کے روز برطانوی وقت کے مطابق صبح نو بجے فون کیا اور بتایا کہ انھیں پانچ سال قید کی سزا سنائی گئی ہے۔

ان کے خاندان والوں کا دعویٰ ہے کہ یہ بات واضح نہیں کہ نازنین کو کس الزام میں قید کیاگیا ہے۔ اس سے قبل ایرانی حکام ان پر ایک ’غیر ملکی دشمن نیٹ ورک‘ کی قیادت کرنے کا الزام لگا چکے ہیں۔

نازنین کے شوہر کا کہنا ہے کہ انھوں نے اپنی بیوی سے فون پر پوچھا کہ ان کے خلاف الزام کیا ہے تو ان کی بیوی نے پاس کھڑے محافظ سے یہی سوال پوچھا جس پر اس محافظ نے جواب دیا ’قومی سلامتی‘ کو خطرے میں ڈالنے کا الزام۔

نازنین کے شوہر کایہ بھی کہنا ہے کہ ممکن ہے ان کی بیوی کو الزامات بتائے گئے ہوں تاہم انھیں یہ منع کر دیا گیا ہو کہ وہ اپنے کسی گھر والے کو ان کے بارے میں معلومات نہ دیں۔

اسی بارے میں